உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Pakistan Political Crisis: عمران خان نے کیا انکشاف، اس امریکی عہدیدار نے بھیجا تھا دھمکی آمیز خط

    Pakistan Political Crisis: عمران خان نے کیا انکشاف، اس امریکی عہدیدار  نے بھیجا تھا دھمکی آمیز خط

    Pakistan Political Crisis: عمران خان نے کیا انکشاف، اس امریکی عہدیدار نے بھیجا تھا دھمکی آمیز خط

    Pakistan Political Crisis: پاکستان میں اس وقت سیاسی گھمسان مچا ہوا ہے۔ اب نگراں وزیر اعظم عمران خان نے اس امریکی عہدیدار کا نام ظاہر کردیا ہے ، جس نے مبینہ طور پر پاکستان کو "دھمکی آمیز خط" لکھا تھا۔

    • Share this:
      اسلام آباد : پاکستان میں اس وقت سیاسی گھمسان مچا ہوا ہے۔ اب نگراں وزیر اعظم عمران خان نے اس امریکی عہدیدار کا نام ظاہر کردیا ہے ، جس نے مبینہ طور پر پاکستان کو "دھمکی آمیز خط" لکھا تھا۔ عمران خان نے پیر کو سابق قانون سازوں سے ملاقات کے دوران انکشاف کیا کہ امریکہ میں ایشیائی امور سے متعلق افسر ڈونلڈ لو نے دھمکی آمیز خط لکھا تھا ۔ عمران خان نے دعویٰ کیا کہ ڈونلڈ لو اور پاکستان کے سفیر اسد مجید کے درمیان ایک ملاقات ہوئی تھی ، جس کے بعد دونوں فریقوں کی میٹنگ منٹس جاری کئے گئے تھے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : عمران خان کی کرسی جاتے ہی دبئی بھاگیں بشری بی بی کی دوست، PTI کے کئی لیڈران بھی فرار


      وہیں جیو نیوز کی ایک رپورٹ کے مطابق ڈونلڈ لو نے گزشتہ دنوں ہندوستان کا دورہ کیا ۔ اس دوران صحافیوں کے سول پر انہوں نے دھمکی آمیز خط کے بارے میں عمران خان کے الزامات اور دعووں پر تبصرہ کرنے سے انکار کر دیا۔ اعلیٰ امریکی عہدیدار نے کہا کہ امریکہ ، پاکستان کی صورتحال پر گہری نظر رکھے ہوئے ہے۔ ہم پاکستان کے آئینی عمل اور قانون کی حکمرانی کا احترام اور حمایت کرتے ہیں۔

       

      یہ بھی پڑھئے : ملک میں جاری سیاسی ہلچل پر پاکستانی فوج نے جاری کیا بڑا بیان، کہی یہ بات


      پاکستانی صحافیوں کے مطابق عمران خان نے یہ خط صحافیوں کو دور سے دکھایا اور اس میں سے صرف اہم باتوں کو ہی میڈیا کے سامنے رکھا گیا ہے ۔ اس خط کو جن صحافیوں کو دکھایا گیا ہے ، ان میں سے ایک نے اے آر وائی نیوز سے بات چیت میں کہا کہ یہ صاف ہے کہ پاکستان میں عدم اعتماد کی تحریک کے ذریعہ جو واقعات ہورہے ہیں ، اس کے بارے میں سات مارچ کو ہی بتایا گیا تھا ۔

      خط میں کہا گیا کہ اگر تحریک عدم اعتماد کامیاب ہو جاتی ہے اور عمران حکومت گر جاتی ہے تو بین الاقوامی سطح پر پاکستان کے مسائل کم ہو جائیں گے۔ اگر یہ تحریک ناکام ہوتی ہے تو پاکستان کو بات منوانے کیلئے دباؤ ڈالنا ہوگا ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: