உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    عمران خان کی بڑھی مشکل ، ایف اے ٹی ایف کی گرے لسٹ میں برقرار رہے گا پاکستان

    عمران خان کی بڑھی مشکل ، ایف اے ٹی ایف کی گرے لسٹ میں برقرار رہے گا پاکستان

    عمران خان کی بڑھی مشکل ، ایف اے ٹی ایف کی گرے لسٹ میں برقرار رہے گا پاکستان

    FATF List: دہشت گردوں کے خلاف ایکشن نہیں لینے کی وجہ سے پاکستان کو پھر سے فائنانشیل ایکشن ٹاسک فورس کی گرے لسٹ میں ہی رکھا گیا ہے ۔

    • Share this:
      اسلام آباد : پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان کی مشکلات مزید بڑھ گئی ہیں ۔ دہشت گردوں کے خلاف ایکشن نہیں لینے کی وجہ سے پاکستان کو پھر سے فائنانشیل ایکشن ٹاسک فورس کی گرے لسٹ میں ہی رکھا گیا ہے ۔ پاکستان نے ایکشن پلان کے 34 میں سے چار نکات پر قدم نہیں اٹھائے ہیں ۔

      ایف اے ٹی ایف کا تین روزہ سیشن 19 سے 21 اکتوبر تک منعقد کیا گیا ، جس میں پاکستان کو ایک مرتبہ پھر سے گرے لسٹ میں ہی رکھا گیا ہے ۔ پاکستان اب اپریل 2022 میں ہونے والی ایف اے ٹی ایف کی اگلی میٹنگ تک گرے لسٹ میں برقرار رہے گا ۔

      اس سال جون کے سیشن میں ایف اے ٹی ایف نے پاکستان کو منی لانڈرنگ کی جانچ میں ناکام پائے جانے کے بعد گرے لسٹ میں برقرار رکھا تھا ۔ ادارہ نے اسلام آباد کو حافظ سعید اور مسعود اظہر سمیت اقوام متحدہ کی دہشت گردوں کی فہرست میں شامل لوگوں پر مقدمہ درج کرنے کیلئے کہا تھا ۔ پاکستان جون 2018 سے گرے لسٹ سے باہر نہیں آسکا ہے ۔

      گرے لسٹ میں رہنے کا نقصان

      گرے لسٹ میں برقرار پاکستان کو آئی ایم ایف ، ورلڈ بینک ، اے ڈی بی اور یوروپی یونین سے مالی مدد ملنی مشکل ہوجائے گی ۔ اس پر کئی طرح کی سخت شرائط عائد ہوں گی ۔ پاکستان اب تک چین ، ترکی اور ملیشیا کی مدد سے بلیک لسٹ میں آنے سے بچتا رہا ہے ۔

      خیال رہے کہ پیرس میں ہونے والے اجلاس کی صدارت جرمنی نے کی، عالمی نیٹ ورک اور مبصر تنظیموں کے 205 ارکان کے وفود نے ایف اے ٹی ایف پلینری کے ہائبرڈ اجلاس میں حصہ لیا۔

      اجلاس میں جرائم اور دہشت گردی کی مالیاتی معاونت کے خلاف عالمی کارروائی کو مضبوط بنانے کے لیے اہم امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: