உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    امت شاہ کی سرجیکل ایئر اسٹرائیک کی دھمکی سے ڈرگیا پاکستان، کہا- ہم امن پسند ملک

    امت شاہ کی سرجیکل ایئر اسٹرائیک کی دھمکی سے ڈرگیا پاکستان، کہا- ہم امن پسند ملک

    امت شاہ کی سرجیکل ایئر اسٹرائیک کی دھمکی سے ڈرگیا پاکستان، کہا- ہم امن پسند ملک

    ہندوستان کے سابق وزیر دفاع منوہر پاریکر (Manohar Parrikar) کو یاد کرتے ہوئے وزیر داخلہ امت شاہ نے کہا کہ سرجیکل اسٹرائیک ہندوستان کے تحفظ میں ایک نیا باب تھا۔ ہم نے پیغام دیا کہ کوئی بھی ہندوستان کی سرحدوں پر حرکت نہیں کرسکتا ہے۔ بات چیت کا وقت تھا، لیکن اب جواب دینے کا وقت آگیا ہے‘۔

    • Share this:
      اسلام آباد: ایک دن پہلے وزیر داخلہ امت شاہ (Amit Shah) نے کہا تھا کہ اگر پاکستان (Pakistan) اپنی حرکتوں سے باز نہیں آیا تو ہندوستان اس پر ایک اور سرجیکل ایئر اسٹرائیک (Surgical Strike) کرسکتا ہے۔ اس پر پاکستان نے کہا ہے کہ پاکستان ایک امن پسند ملک ہے، لیکن اگر ہندوستان کوئی بھی جارحانہ کارروائی کرتا ہے تو اسے ناکام کر دیں گے۔ گوا کے سابق وزیر اعلیٰ اور ہندوستان کے سابق وزیر دفاع منوہر پاریکر (Manohar Parrikar) کو یاد کرتے ہوئے وزیر داخلہ امت شاہ نے کہا کہ سرجیکل اسٹرائیک ہندوستان کے تحفظ میں ایک نیا باب تھا۔ ہم نے پیغام دیا کہ کوئی بھی ہندوستان کی سرحدوں پر حرکت نہیں کرسکتا ہے۔ بات چیت کا وقت تھا، لیکن اب جواب دینے کا وقت آگیا ہے‘۔

      پاکستانی وزارت دفاع نے کیا کہا؟

      اس بیان کے بعد پاکستان نے کہا، ’امت شاہ کا بیان زیادہ سرجیکل اسٹرائیک کے لئے وارننگ دینے والا ہے۔ یہ غیر ذمہ دار اور اکسانے والا ہے۔ پاکستان کے وزارت دفاع نے کہا، ’ان کا گمراہ کن بیان صرف بی جے پی- آر ایس ایس اتحاد کے نظریاتی وجوہات اور سیاسی فوائد دونوں کے لئے علاقائی کشیدگی کو بھڑکانے کی رجحان کو دکھاتا ہے، جو پاکستان سے دشمنی کی بنیاد پر ہے‘۔ اس نے کہا، ‘جبکہ پاکستان ایک امن پسند ملک ہے۔ ہم کسی بھی جارحانہ منصوبے کو پوری طرح ناکام کرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑیں گے‘۔

      پاکستانی وزارت خارجہ نے کہا کہ سال 2019 میں ہندوستان کے بالا کوٹ والے قدم کا پاکستان نے دلیری سے جواب دیا۔ اس میں ہندوستانی جنگی طیارے کو گرانا اور ہندوستانی فضائیہ کے پائلٹ کو پکڑنا شامل ہے۔ یہ ہندوستانی جارحیت کو روکنے کے لئے ہمارے مسلح افواج کی خواہش، صلاحیت اور تیاریوں کو پوری طرح سے دکھاتا ہے۔

      وزیر داخلہ امت شاہ کا یہ بیان اور پاکستان کا اس پر جواب ایسے وقت میں آیا ہے، جب جموں وکشمیر میں شہریوں کے قتل کے حادثات میں اضافہ ہو رہا ہے۔ امت شاہ 23 اکتوبر سے 25 اکتوبر کے درمیان جموں وکشمیر کا دورہ کریں گے۔ اگست 2019 میں آرٹیکل 370 کو ختم کرنے کے بعد ان کا پہلا سفر ہے۔ واضح رہے کہ آرٹیکل 370 کے ہٹنے کے بعد سے ہی پاکستان کو زیادہ مرچی لگی ہوئی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ پاکستانی لیڈر ہندوستان کے خلاف آئے دن زہر بھی اگلتے رہتے ہیں۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: