உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Pakistan میں عمران خان کی جان کو خطرہ؟ اسلام آباد میں ہائی الرٹ، حال میں واپس لی گئی تھی سیکورٹی

    پاکستان میں سابق وزیر اعظم عمران خان کے قتل کی سازش کی افواہوں کے درمیان اسلام آباد پولیس نےکہا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے صدر کی بانی گالا میں ممکنہ دورہ کو دیکھتے ہوئے سیکورٹی بڑھا دی گئی ہے۔ ہائی الرٹ جاری کر دیا گیا ہے۔ خصوصی سیکورٹی ٹیم کو تعینات کیا گیا ہے۔

    پاکستان میں سابق وزیر اعظم عمران خان کے قتل کی سازش کی افواہوں کے درمیان اسلام آباد پولیس نےکہا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے صدر کی بانی گالا میں ممکنہ دورہ کو دیکھتے ہوئے سیکورٹی بڑھا دی گئی ہے۔ ہائی الرٹ جاری کر دیا گیا ہے۔ خصوصی سیکورٹی ٹیم کو تعینات کیا گیا ہے۔

    پاکستان میں سابق وزیر اعظم عمران خان کے قتل کی سازش کی افواہوں کے درمیان اسلام آباد پولیس نےکہا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے صدر کی بانی گالا میں ممکنہ دورہ کو دیکھتے ہوئے سیکورٹی بڑھا دی گئی ہے۔ ہائی الرٹ جاری کر دیا گیا ہے۔ خصوصی سیکورٹی ٹیم کو تعینات کیا گیا ہے۔

    • Share this:
      اسلام آباد: پاکستان میں سابق وزیر اعظم عمران خان کے قتل کی سازش کی افواہیں ایک بار پھر سے زور پکڑ لی ہیں۔ حالات کو دیکھتے ہوئے اسلام آباد پولیس نے شہر کے بانی گالا اور اس سے متصل علاقوں میں سیکورٹی ایجنسیوں کو ہائی الرٹ کردیا ہے۔ اسلام آباد میں دفعہ 144 پہلے ہی لگائی جا چکی ہے اور سبھی طرح کی تقریبات پر پابندی لگا دی گئی ہے۔ عمران خان اتوار کو یہاں پر ایک پروگرام میں حصہ لینے والے ہیں۔ بنی گالا اسلام آباد کا رہائشی علاقہ ہے۔

      اسلام آباد پولیس کے ترجمان نے ٹوئٹ کرکے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے صدر عمران خان کی بانی گالا میں ممکنہ سفر کو دیکھتے ہوئے علاقے میں سیکورٹی میں اضافہ کردیا گیا ہے اور ہائی الرٹ بھی جاری کردیا گیا ہے۔ حالانکہ ابھی تک اسلام آباد پولیس کو عمران خان کی ٹیم کی طرف سے واپسی کی کوئی تصدیق شدہ خبرنہیں ملی ہے۔

      پاکستان میں سابق وزیر اعظم عمران خان کے قتل کی سازش کی افواہیں ایک بار پھر سے زور پکڑ لی ہیں۔
      پاکستان میں سابق وزیر اعظم عمران خان کے قتل کی سازش کی افواہیں ایک بار پھر سے زور پکڑ لی ہیں۔


      ترجمان نے کہا کہ سیکورٹی ڈویژن نے بانی گالا میں خصوصی سیکورٹی ٹیم کو تعینات کیا گیا ہے۔ بانی گالا میں لوگوں کی فہرست ابھی تک پولیس کو دستیاب نہیں کرائی گئی ہے۔ اسلام آباد میں دفعہ 144 نافذ ہے اور ضلع مجسٹریٹ کے حکم کے مطابق، کسی بھی جماعت (تقریب) کو اجازت نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسلام آباد پولیس قانون کےمطابق، عمران خان کو پوری سیکورٹی مہیا کرائی کرائے گی۔ امید ہےکہ اس کام میں عمران خان کی سیکورٹی ٹیم بھی تعاون کرے گی۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      ٹوٹنے کی طرف بڑھ رہا ہے پاکستان؟ سابق وزیر اعظم عمران خان کے دعوے کے درمیان جانئے کیسے ہیں حالات!

      پاکستانی اخبار دی نیشن کے مطابق، دو دن پہلے ہی پی ٹی آئی لیڈر شہباز شریف گل نے ٹوئٹ کرکے دعویٰ کیا تھا کہ عمران خان کی سیکورٹی میں متصل اسلام آباد پولیس کے سبھی جوانوں کو جمعرات کی شام کو ہٹا دیا گیا ہے۔ انہوں نے شہباز شریف حکومت پر حملہ بولتے ہوئے کہا تھا کہ ایک قصوروار مریم نوازکو وزیر اعظم سطح کی سیکورٹی دی گئی ہے، جبکہ دوسری طرف سے سابق وزیراعظم اور پی ٹی آئی کے صدر عمران خان کی سیکورٹی واپس لےلی گئی ہے۔ گل نے اسے امپورٹیڈ حکومت کی سستی سیاست قرار دیا۔

      نیوز ایجنسی اے این آئی کے مطابق، عمران خان کے بھتیجے حسن نیازی نے کہا ہے کہ اگر پی ٹی آئی سربراہ کو کچھ ہوتا ہے تو اسے پاکستان پر حملہ مانا جائے گا۔ اس کا ردعمل جارحانہ ہوگا، ایسا کہ ہینڈلرس کو بھی پچھتاوا ہوگا۔ عمران خان اپریل میں جب وزیر اعظم تھے، تب پی ٹی آئی کے لیڈر اور وزیر فواد چودھری نے کہا تھا کہ وزیر اعظم عمران خان کے قتل کی سازش کے بارے میں سیکورٹی ایجنسیوں کو پتہ چلا ہے۔ ان رپورٹس کے بعد وزیر اعظم کی سیکورٹی بڑھا دی گئی ہے۔

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: