پاکستان کو ستارہا ہے ہندوستان کے حملے کا خوف، ہوئی ہائی پروفائل میٹنگ

کشمیرکے حالات پرہفتہ کو پاکستان کے اعلیٰ افسران نے میٹنگ کی۔ اس میٹنگ کے بعد پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی اورپاکستانی فوج کے ترجمان میجر جنرل آصف غفورنے ایک مشترکہ پریس کانفرنس کی۔

Aug 17, 2019 11:58 PM IST | Updated on: Aug 18, 2019 12:01 AM IST
پاکستان کو ستارہا ہے ہندوستان کے حملے کا خوف، ہوئی ہائی پروفائل میٹنگ

کشمیرکے حالات پرہفتہ کو پاکستان کے اعلیٰ افسران نے میٹنگ کی۔

ہندوستان اورپاکستان کے تعلقات ایک بارپھرکشیدہ ہوگئے ہیں، وجہ جموں وکشمیرسے ہندوستانی آئین کے دفعہ 370 کوہٹایا جانا ہے۔ پاکستان مودی حکومت کے اس فیصلے سے بوکھلایا ہوا ہے۔ وہ پوری دنیا میں اس موضوع کواٹھاکر ہندوستان کو گھیرنے کی کوشش میں مصروف ہے۔ حالانکہ اس کی یہ کوشش بالکل بھی کامیاب نہیں ہوپارہی ہے۔ کشمیرکے حالات پرہفتہ کو پاکستان کے اعلیٰ افسران نے میٹنگ کی۔ اس میٹنگ کے بعد پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی اورپاکستانی فوج کے ترجمان میجر جنرل آصف غفورنے ایک مشترکہ پریس کانفرنس کی۔

آصف غفورنے کہا کہ ایسا ہوسکتا ہے کہ کشمیرموضوع سے دنیا کی توجہ ہٹانے کے لئے ہندوستان پاکستان پرحملہ کرسکتا ہے۔ آصف غفورنے کہا کہ پاکستان کسی بھی حالات سے نمٹنے کےلئے تیارہے۔ اس کے علاوہ انہوں نے کہا کہ کنٹرول لائن پراضافی فوجی تعینات کئے گئے ہیں۔ اچانک جنگ کی وارننگ دیتے ہوئے آصف غفورنے کہا کہ کشمیرموضوع ایک نیوکلیئرفلیش پوائنٹ ہے۔

Loading...

شاہ محمود قریشی نے کہی یہ بات

وہیں پاکستان کے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ کشمیرموضوع کوعالمی سطح پر لانے کے لئے سبھی سفارت خانوں میں کشمیری شہریوں کو مقررکیا جائے گا۔ اقوام متحدہ سلامتی کونسل (یواین ایس سی) کولے کرانہوں نےکہا کہ ہم نے کشمیرموضوع کوبہت اوپر تک اٹھایا ہے، جوکہ ایک بڑی کامیابی ہے۔  انہوں نے کہا 'یواین ایس سی میں یہ معاملہ پانچ دہائی کے بعد اٹھایا گیا اوراس پرغوروخوض کیا گیا جوکہ ایک اچھا قدم ہے۔ خاص طور پر جب ہندوستان نے اسے روکنے کی پوری کوشش کی۔ انہوں نے کہا کہ میٹنگ میں اس بات پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا کہ اسے کس طرح آگے بڑھایا جائے۔

 

 

Loading...