உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستان کا دعویٰ: 4 دہشت گرد تنظیموں کے 8 دہشت گرد گرفتار، داعش کا ٹاپ کمانڈر بھی ہلاک

    ایک پاکستانی عہدیدار نے یہ بھی بتایا کہ اتوار کو صوبہ بلوچستان میں دولت اسلامیہ کا ایک اعلیٰ کمانڈر مارا گیا۔

    ایک پاکستانی عہدیدار نے یہ بھی بتایا کہ اتوار کو صوبہ بلوچستان میں دولت اسلامیہ کا ایک اعلیٰ کمانڈر مارا گیا۔

    ایک پاکستانی عہدیدار نے یہ بھی بتایا کہ اتوار کو صوبہ بلوچستان میں دولت اسلامیہ کا ایک اعلیٰ کمانڈر مارا گیا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      3اسلام آباد: پاکستان کے صوبہ پنجاب کے مختلف علاقوں سے اسلامک اسٹیٹ (آئی ایس آئی ایس) اور تحریک طالبان پاکستان (ٹی ٹی پی) سمیت چار تنظیموں کے آٹھ دہشت گردوں terrorist کو گرفتار کیا گیا ہے۔ یہ معلومات اتوار کو یہاں پولیس نے دی ہے۔ پولیس نے بتایا کہ پاکستان میں حالیہ دہشت گردانہ سرگرمیوں خاص طور سے پولیس افسران کے قتل کے  مد نظر پنجاب پولیس کے (سی ٹی ڈی) نے گزشتہ ایک ہفتے کے دوران صوبے میں انٹیلی جینس پر مبنی وسیع آپریشن کیا اور 40 مشتبہ دہشت گردوں سے پوچھ گچھ کی۔

      سی ٹی ڈی نے ایک بیان میں کہا کہ 40 مشتبہ دہشت گردوں میں سے 8 کو لاہور ، حافظ آباد ، گوجرانوالہ اور شیخوپورہ سے گرفتار کیا گیا ہے۔ گرفتار کئے گئے دہشت گردوں کا تعلق اسلامک اسٹیٹ (آئی ایس آئی ایس) اور تحریک طالبان پاکستان (TTP) ، لشکر جھنگوی (جے ای جے) اور سپاہ صحابہ پاکستان (ایس ایس پی) سے ہے اور وہ دہشت گردی کی مالی معاونت سمیت مختلف دہشت گردانہ سرگرمیوں میں ملوث تھے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ ان کے قبضے سے اسلحہ برآمد کیا گیا ہے۔

      یہ ہیں دہشت گردوں کے نام:
      گرفتار افراد کی شناخت محمد مشتاق ، سمیع اللہ حبیب ، عادل جمال ، اسامہ خالد ، ممشالی خان ، حافظ عبدالرحمان ، کاشف محمود اور منصور احمد کے طور پر ہوئی ہے۔ سی ٹی ڈی نے کہا کہ ان کے خلاف مختلف تھانوں میں ایف آئی آر درج کی گئی ہیں اور ان سے ان کے دہشت گرد نیٹ ورک کے بارے میں پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔ یقینا پاکستان Pakistan دہشت گردوں کے خلاف کارروائی کے دعوے کر رہا ہے۔ تاہم ، اس کے دعوؤں میں کتنی سچائی ہے اس بارے میں واضح طور پر کچھ نہیں کہا جا سکتا۔

      ISIS کے کمانڈر کو مارنے کا دعویٰ
      ایک پاکستانی عہدیدار نے یہ بھی بتایا کہ اتوار کو صوبہ بلوچستان میں دولت اسلامیہ کا ایک اعلیٰ کمانڈر مارا گیا۔ کمانڈر کو سکیورٹی فورسز نے کالعدم بلوچستان لبریشن آرمی (بی ایل اے) کے صوبے کے ضلع ہرنائی میں فرنٹیئر کور (ایف سی) کی گاڑی پر حملے کے دعوے کے چند گھنٹے بعد ہلاک کر دیا۔ بی ایل اے کے حملے میں چار فوجی ہلاک اور ایک زخمی ہوگیا تھا۔

       

      بلوچستان کے کاؤنٹر ٹیررازم ڈیپارٹمنٹ (سی ٹی ڈی) کے ترجمان نے بتایا کہ سکیورٹی فورسز نے ضلع مستونگ میں داعش کے کمانڈر ممتاز احمد عرف پہلوان کو ہلاک کر دیا ہے۔ اس کے سر پر دو لاکھ 200,000 پاکستانی روپے (1180 امریکی ڈالر) کا اعلان کیا گیا۔ (ایجنسی ان پٹ)
      Published by:Sana Naeem
      First published: