உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کرتار کاریڈور کے بہانے Pakistan کی ناپاک سازش، خفیہ ایجنسیوں کی نظر میں ہندوستانی زائرین

    کرتار کاریڈور کے بہانے پاکستان کی ناپاک سازش

    کرتار کاریڈور کے بہانے پاکستان کی ناپاک سازش

    Pakistan conspiracy against India: سکھوں کے مقدس مذہبی مقام گرو نانک کے کام کرنے کی جگہ کرتارپور صاحب کاریڈور کے بہانے پاکستان اپنی ناپاک سازش کو انجام دے رہا ہے۔ ذرائع سے ملی خبر کے مطابق، پاکستان گلیارے کا غلط استعمال کر رہا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: سکھوں کے مقدس مذہبی مقام گرو نانک کے کام کرنے کی جگہ کرتارپور صاحب کاریڈور کے بہانے پاکستان اپنی ناپاک سازش کو انجام دے رہا ہے۔ ذرائع سے ملی خبر کے مطابق، پاکستان گلیارے کا غلط استعمال کر رہا ہے۔ ذرائع کے مطابق، کاریڈور پر ہمیشہ پاکستان خفیہ ایجنسیوں کے لوگ موجود رہتے ہیں اور ہندوستانی عقیدتمندوں سے اپنے استعمال کی مناسب جانکاری جمع کرنے کی کوشش میں لوگ رہتے ہیں۔ اتنا ہی نہیں، کرتار پور کاریڈور کا استعمال پاکستان بزنس کے لئے بھی کر رہا ہے۔ ہندوستان سے کرتار پور صاحب جانے والے عقیدتمندوں سے رابطہ پاکستانی خفیہ ایجنسی کے افسر ملک کے بارے میں اپنے استعمال میں آنے والی جانکاری جمع کرنے کے فراق میں لگے رہتے ہیں۔

      بزنس میٹنگیں بھی ہوتی ہیں

      ذرائع کے مطابق، ہندوستان کو کرتار پور صاحب گلیارے کے غلط استعمال سے اعتراض ہے۔ اب تک اس پر کوئی آفیشیل بیان سامنے نہیں آیا ہے، لیکن ہندوستان نظر بنائے ہوئے ہے۔ اس گلیارے کا مقصد صرف مذہبی سفر ہے۔ حالانکہ بزنس میٹنگوں پر روک نہیں ہے۔ پاکستان کے ذریعہ خفیہ جانکاری جمع کئے جانے کو لے کر حال ہی میں روٹری کلب کے افسران کی میٹنگ ہوئی ہے۔ اس بارے میں ہندوستانی حکومت کو واقف کرایا گیا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      یہ ہیں Pakistan کی سب سے اسٹائلسٹ خاتون لیڈر، کام سے زیادہ فیشن کی رہتی ہے چرچا

      سال 2019 میں ہندوستانی عقیدتمندوں کے لئے کھلا تھا گرودوار

      سکھوں کے لئے کرتار پور صاحب کی خصوصی اہمیت ہے۔ سکھوں کے پہلے گرو نانک دیو جی نے کرتار پور صاحب میں ہی سکھ مذہب کا قیام کیا تھا۔ راوی ندی کے ساحل پر انہوں نے اس مذہب کو بسایا تھا۔ یہیں پر گرونانک دیو جی نے سمادھی لی تھی۔ اسی گرودوارے میں سب سے پہلے لنگر کی شروعات ہوئی کیونکہ گرونانک دیو جی نے نام جپو، کیرت کرو اور ونڈ چھکو یعنی تقسیم کرکے کھاو کا پیغام دیا تھا۔ کرتار پور کاریڈور کو گروداس پور کے ڈیرا بابا نانک سے لے کر ایل او سی تک تقریباً چار کلو میٹر میں بنایا گیا ہے۔

      سال 2018 میں اس کی سنگ بنیاد رکھی گئی تھی۔ کرتار پور کاریڈور کا افتتاح 9 نومبر 2019 کو کیا گیا۔ گرونانک دیو کے 550 پرکاش پرو پر اس کاریڈور کو کرتار پور صاحب کے درشن کے لئے کھولا گیا۔ اس سے پہلے عقیدت مند ڈیرا بابا نانک واقع گرودوارہ شہید بابا سدھ سین رندھاوا سے دوربین کی مدد سے دیکھتے تھے۔ سال 1999 میں پہلی بار اس وقت کے وزیراعظم اٹل بہاری باجپئی نے کرتارپور صاحب کاریڈور کو بنانے کی تجویز دی تھی۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: