کلبھوشن جادھو پرپاکستان لےگا بڑا فیصلہ، سول کورٹ میں چل سکے گا مقدمہ

پاکستان حکومت نے آرمی ایکٹ میں کئی تبدیلی کرنے کا فیصلہ لیا ہے۔ اس تبدیلی کے بعد کلبھوشن جادھو کواپنی گرفتاری کے خلاف سول کورٹ میں اپیل کرنی ہوگی۔

Nov 13, 2019 04:39 PM IST | Updated on: Nov 13, 2019 05:17 PM IST
کلبھوشن جادھو پرپاکستان لےگا بڑا فیصلہ، سول کورٹ میں چل سکے گا مقدمہ

کلبھوشن جادھو: فائل فوٹو

لاہور: پاکستان کی جیل میں بند ہندوستانی شہری کلبھوشن جادھومعاملے میں عمران خان حکومت بہت جلد بڑا فیصلہ لینے جارہی ہے۔ ذرائع کے مطابق جادھوکے معاملے کوسول کورٹ میں بھیجنے کی تیاری کی گئی ہے۔ اس کے لئے پاکستان حکومت نے آرمی ایکٹ میں کئی تبدیلی کرنے کا فیصلہ لیا ہے۔ اس تبدیلی کے بعد کلبھوشن جادھو کواپنی گرفتاری کے خلاف سول کورٹ میں اپیل کرنی ہوگی۔

کلبھوشن جادھو پرابھی تک آرمی کورٹ میں مقدمہ چلایا جارہا ہے۔ آرمی ایکٹ کے تحت ایسے اشخاص یا گروہ کوجس کا مقدمہ آرمی کورٹ میں چل رہا ہو، اسے سول کورٹ میں اپیل کرنے کی اجازت نہیں دی جاتی، لیکن کلبھوشن جادھومعاملے کولے کرپاکستان آرمی کورٹ کےاس ایکٹ میں ترمیم کرے گا۔

Loading...

واضح رہےکہ کلبھوشن جادھومعاملے میں پاکستان کوحال میں ہی بڑی شکست ملی ہے۔ انٹرنیشنل جسٹس کورٹ کے صدرجج نےکہا کہ اس معاملےمیں پاکستان نے ویانا معاہدہ  کے ضوابط کی خلاف ورزی کی ہے۔ آئی سی جے نےکہا کہ اس گرفتاری کی اطلاع ہندوستانی سفارت خانے کوبھی نہیں دی گئی تھی۔ یہاں تک کہ ہندوستان کی کئی باراپیل کے بعد بھی کلبھوشن جادھوکوکاونسلرایکسس نہیں دیا گیا۔

آئی سی جے کے صدرجج عبدالقوی یوسف نےاقوام متحدہ میں بیان دیتے ہوئےکہا تھا کہ پاکستان نے ویانا معاہدہ کےآرٹیکل 36 کی خلاف ورزی کی ہے۔ ہندوستان ہمیشہ سے کلبھوشن جادھوکوکاؤنسلرایکسس دینے کا مطالبہ کرتا رہا ہے، جسے پاکستان نے ہربارخارج کیا ہے۔ پاکستان نے جادھوکومارچ 2016 میں پکڑا تھا اوراپریل 2017 میں پاکستان کی فوجی عدالت نے انہیں ہندوستانی جاسوس اوردہشت گرد بتا کرموت کی سزا سنائی تھی۔

Loading...