உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستان میں 15 سال کی لڑکی سے ایمبولینس میں ریپ، سڑک پر پھینک کر ملزم فرار

    علامتی تصویر

    علامتی تصویر

    پولیس نے بتایا کہ لڑکی کے بارے میں کہا جارہا ہے کہ وہ دماغی طور سے ٹھیک نہیں ہے

    • Share this:
      پاکستان کے پنجاب صوبے میں ایک ایمبولینس میں دو لوگوں نے 15 سال کی ایک سکھ لڑکی کے ساتھ مبینہ طورپر ریپ کیا ۔ پولیس نے اتوار کو یہ جانکاری دی۔ پولیس نے بتایا کہ لڑکی کے بارے میں کہا جارہا ہے کہ وہ دماغی طور سے ٹھیک نہیں ہے۔ وہ ننکانا صاحب شہر میں واقع ایک گرودوارے سے سنیچر کو لاپتہ ہو گئی تھی۔

      انہوں نے بتایا کہ جب وہ واپس نہیں لوٹی تو اس کے اہل خانہ نے پولیس کو اس کی اطلاع دی۔ لڑکی کے والد نے بتایا کہ اہل خانہ نے ننکانا بائی پاس پر پنجاب ایمرجنسی سروس کی ایک ایمبولینس دیکھی۔ انہوں نے بتایا " ہم  نے ایمبولینس کے اندر ایک لڑکی کے چلانے کی آواز سنی۔ ہم جلد ہی ایمبولینس تک پہنچے اور دیکھا کہ دو لوگ ہماری بچی کا جنسی استحصال کر رہے تھے۔ ملزموں نے لڑکی کو دو کلو میٹر دور گاڑی سے باہر پھینک دیا اور فرار ہو گئے۔
      First published: