اپنا ضلع منتخب کریں۔

    عمران خان نے اسٹیبلشمنٹ کو کیا خبردار، کہا ’چندطاقتوروں کے فیصلےپاکستانی نہیں کریں گےقبول‘

    عمران خان (Imran Khan)

    عمران خان (Imran Khan)

    عمران خان کے قریبی ذرائع نے بتایا کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سربراہ نے بارہا کہا ہے کہ آرمی چیف کا انتخاب میرٹ، پیشہ ورانہ مہارت اور اہلیت کی بنیاد پر کیا جائے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Pakistan
    • Share this:
      سابق وزیراعظم عمران خان نے اس بات کا اظہار کیا کہ پاکستان کو ایک مضبوط، پیشہ ورانہ فوج کی ضرورت ہے جو سیاست کے دائرے سے باہر رہے۔ عمران خان کے قریبی ذرائع نے بتایا کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سربراہ نے بارہا کہا ہے کہ آرمی چیف کا انتخاب میرٹ، پیشہ ورانہ مہارت اور اہلیت کی بنیاد پر کیا جائے۔

      اسٹیبلشمنٹ کو بظاہر انتباہ دیتے ہوئے عمران خان نے واضح کیا ہے کہ پاکستانی اب ان فیصلوں کو قبول نہیں کریں گے جو بند دروازوں کے پیچھے بیٹھے چند طاقتور افراد کے ذریعے کیے گئے ہیں۔ جمہوریت کو مضبوط کرنے والے سول ملٹری تعلقات پر زور دیتے ہوئے عمران خان نے کہا ہے کہ سب سے مقبول سیاسی جماعت پی ٹی آئی اور اسٹیبلشمنٹ کو مل کر کام کرنا ہوگا۔

      عاصم منیر پاکستان کی انٹر سروسز انٹیلی جنس (آئی ایس آئی) کے سابق ڈائریکٹر جنرل ہیں۔ وہ 27 نومبر کو ریٹائر ہونے والے تھے لیکن اس تقرری کے ساتھ ہی ریٹائرمنٹ ملتوی ہو جائے گی اور انہیں سی او اے ایس کی حیثیت سے تین سال کی مدت ملازمت ملے گی۔ عمران خان کے بطور وزیر اعظم دور میں منیر کو ان کی تقرری کے آٹھ ماہ کے اندر ڈی جی آئی ایس آئی کے عہدے سے ہٹا دیا گیا تھا اور ان کی جگہ 2019 میں لیفٹیننٹ جنرل فیض حمید کو تعینات کیا گیا تھا۔

      یہ بھی پڑھیں: 

      آرمی چیف کی تقرری کا حتمی فیصلہ پاکستانی صدر اور ملک کی مسلح افواج کے سپریم کمانڈر لیتے ہیں۔ موجودہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ تین سال کی توسیع کے بعد اگلے ہفتے ریٹائر ہونے والے ہیں۔ ملک کے آرمی چیف کی حیثیت سے آخری بار یوم شہدا پاکستان (یوم شہداء) سے خطاب کرتے ہوئے جنرل باجوہ نے سابق عمران خان کو یہ کہتے ہوئے نشانہ بنایا کہ ’’ایک جعلی اور جھوٹی داستان بنا کر پریشانی کی کیفیت پیدا کی گئی‘‘۔

      انھوں نے کہا کہ غیر ملکی سازش ہو اور فوج خاموش رہے تو بڑا گناہ ہے۔ فوج نے سیاسی معاملات میں مداخلت نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ پاک فوج کی سیاست میں مداخلت غیر آئینی ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: