உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستان کے سابق وزیراعظم نواز شریف کی بیٹی مریم نواز اور انکے شوہر کرپشن کیس میں بری

    میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے لندن میں اپنے والد نواز شریف سے بھی بات کی

    میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے لندن میں اپنے والد نواز شریف سے بھی بات کی

    Maryam Nawaz: میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے لندن میں اپنے والد نواز شریف سے بھی بات کی اور ان کے چچا وزیر اعظم شہباز شریف کا ایک اور فون بھی آیا جنہوں نے انہیں بری ہونے پر مبارکباد دی۔ بعد ازاں وزیراعظم نے فیصلے پر اپنے ردعمل میں کہا کہ جھوٹ، بہتان تراشی اور کردار کشی کی عمارت گر چکی ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • inter, IndiaPakistanPakistanPakistan
    • Share this:
      پاکستان کے سابق وزیراعظم نواز شریف کی بیٹی مریم نواز اور ان کے شوہر کو کرپشن کیس میں بری کردیئے جانے پر حکمراں جماعت پاکستان مسلم لیگ نواز (PML-N) کے لیے ایک بڑی قانونی فتح قرار دیا جارہا ہے۔ پاکستان مسلم لیگ نواز کی نائب صدر مریم نواز کو جمعرات کے روز ایک عدالت نے بدعنوانی کے ایک مقدمے میں بری کر دیا جس کے بعد وہ انتخابات میں حصہ لے سکیں گی۔

      اسلام آباد ہائی کورٹ (IHC) نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کی صاحبزادی مریم اور ان کے شوہر محمد صفدر کی اپیل کو منظور کر لیا جنہوں نے جولائی 2018 میں ایون فیلڈ پراپرٹی کیس میں انسداد بدعنوانی کی عدالت کی طرف سے ان کی سزاؤں کو چیلنج کیا تھا۔ ایون فیلڈ کیس لندن میں ایون فیلڈ ہاؤس، پارک لین میں چار پوش فلیٹس کی خریداری سے متعلق ہے۔ جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی پر مشتمل دو رکنی بینچ نے ان کی اپیلوں کی سماعت کرتے ہوئے کہا کہ تفتیشی افسر کی رائے کو ثبوت نہیں سمجھا جا سکتا۔

      جسٹس کیانی نے ریمارکس دیئے کہ مشترکہ تحقیقاتی ٹیم نے کوئی حقائق پیش نہیں کیے صرف معلومات اکٹھی کیں۔ کیس کے اختتام پر بینچ نے کہا کہ قومی احتساب بیورو (نیب) کے کیس میں بدعنوانی کے الزامات کو ثابت کرنے میں پراسیکیوٹر ناکام رہا ہے۔ نیب نے شریف خاندان پر ان کے معلوم ذرائع آمدن سے زائد رقم سے فلیٹس خریدنے کا الزام لگایا تھا۔ شریفوں نے غلط کام کا الزام مسترد کر دیا لیکن یہ بتانے سے قاصر رہے کہ فلیٹس کی رقم کہاں سے آئی؟ نیب نے ستمبر میں آئی ایچ سی کے سامنے اعتراف کیا تھا کہ ایون فیلڈ پراپرٹیز کی خریداری میں مسلم لیگ ن کے رہنما کا براہ راست کوئی کردار نہیں تھا۔



      یہ بھی پڑھیں:

      بہت جلد اب ہندوستان میں ہوگا فائیو جی کا استعمال، دہلی ہوائی اڈےکاٹرمینل 3 اب 5G کیلئےتیار

      جمعرات کے فیصلے کی وجہ سے 48 سالہ مریم کے لیے الیکشن لڑنے کی اہل ہونے کی راہ ہموار ہوگئی ہے۔ وکیل مرزا معیز بیگ نے کہا کہ جو شخص بدعنوانی یا اخلاقی گراوٹ کے جرم میں سزا یافتہ ہو اسے الیکشن لڑنے کے لیے نااہل قرار دیا جاتا ہے جب تک کہ اس کی رہائی کے بعد سے پانچ سال کا عرصہ نہ گزر جائے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      ٹیم انڈیا کو لگا بڑا جھٹکا، تیز گیند باز جسپریت بمراہ ٹی ٹوینٹی ورلڈ کپ سے باہر

      میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے لندن میں اپنے والد نواز شریف سے بھی بات کی اور ان کے چچا وزیر اعظم شہباز شریف کا ایک اور فون بھی آیا جنہوں نے انہیں بری ہونے پر مبارکباد دی۔ بعد ازاں وزیراعظم نے فیصلے پر اپنے ردعمل میں کہا کہ جھوٹ، بہتان تراشی اور کردار کشی کی عمارت گر چکی ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: