ہوم » نیوز » عالمی منظر

سرجیکل اسٹرائک کا اثر، ہٹائے جا سکتے ہیں پاکستان کی طاقتور ایجنسی آئی ایس آئی کے چیف ...؟

پاکستان کی طاقتور جاسوسی ایجنسی آئی ایس آئی کے سربراہ لیفٹیننٹ جنرل رضوان اختر کو وقت سے پہلے ہٹایا جا سکتا ہے۔

  • IBN Khabar
  • Last Updated: Oct 08, 2016 02:03 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
سرجیکل اسٹرائک کا اثر، ہٹائے جا سکتے ہیں پاکستان کی طاقتور ایجنسی آئی ایس آئی کے چیف ...؟
پاکستان کی طاقتور جاسوسی ایجنسی آئی ایس آئی کے سربراہ لیفٹیننٹ جنرل رضوان اختر کو وقت سے پہلے ہٹایا جا سکتا ہے۔

اسلام آباد۔ پاکستان کی طاقتور جاسوسی ایجنسی آئی ایس آئی کے سربراہ لیفٹیننٹ جنرل رضوان اختر کو وقت سے پہلے ہٹایا جا سکتا ہے۔ ایک میڈیا رپورٹ میں آج یہ جانکاری دی گئی ہے۔ اگلے چند ہفتوں میں آئی ایس آئی میں ہونے والے اس بڑے ردوبدل کو ہندوستان کے سرجیکل حملہ سے جوڑ کر دیکھا جا رہا ہے۔ انتہائی خفیہ طریقے سے انجام دئے گئے سرجیکل حملہ کی بھنک تک پاک انٹیلی جنس ایجنسی کو نہیں لگ سکی اور اسی وجہ سے اس پر سوال اٹھ رہے ہیں۔


اختر کو ستمبر 2014 میں انٹر سروسز انٹیلی جنس (آئی ایس آئی) کا ڈائریکٹر جنرل بنایا گیا تھا۔ انہوں نے نومبر 2014 میں منصب سنبھالا تھا۔ انہوں نے لیفٹیننٹ جنرل ظہیر الاسلام کی جگہ لی تھی۔ عموماً تقرری تین سال کی مدت کے لئے ہوتی ہے۔ اس میں صرف تبھی تبدیلی آتی ہے جب آئی ایس آئی چیف ریٹائر ہوجائیں یا فوجی سربراہ ان کی جگہ لے لیں۔


رپورٹ میں کہا گیا ہے، 'وہ آئی ایس آئی ڈی جی کے عہدے کے لئے طے شدہ تین سال کی مدت سے پہلے ہی ہٹ سکتے ہیں۔' ایک افسر کے مطابق کراچی پلٹن کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل نوید مختار ان کی جگہ لے سکتے ہیں۔ ایک اور افسر کا کہنا ہے کہ تبدیلی کا وقت اس بات پر منحصر کرے گا کہ 'فوجی سربراہ راحیل شریف کو توسیع ملتی ہے یا پھر جیسا کہ اعلان کیا گیا ہے انہیں ریٹائرمنٹ دے دی جاتی ہے۔' اس سال کی شروعات میں راحیل نے اعلان کیا تھی کہ انہیں توسیع نہیں چاہئے اور نومبر کے مہینے میں وہ ریٹائر ہو جائیں گے۔


تاہم فوج کے ترجمان عاصم باجوا نے آئی ایس آئی کے سربراہ کو ہٹائے جانے کی خبروں کو غلط بتایا ہے۔
First published: Oct 08, 2016 02:03 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading