ہوم » نیوز » عالمی منظر

فلسطین کی جانب سے امداد کامطالبہ، اقوام متحدہ اسرائیلی حملوں پرخاموشی توڑنے میں ناکام

اقوام متحدہ (United Nations) میں فلسطین کے مندوب ریاض منصور (Riyad Mansour) نے نیویارک میں اقوام متحدہ کے صدر دفتر میں پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ ’’میں نے اقوام متحدہ سے غزہ پٹی (Gaza Strip) میں فلسطینی عوام کے تیئں انسانی امداد کے لئے ہنگامی کال جاری کرنے کا مطالبہ کیا ہے، لیکن ابھی تک وہاں سے کوئی تشفی بخش جواب نہیں ملا ہے‘‘۔

  • Share this:
فلسطین کی جانب سے امداد کامطالبہ، اقوام متحدہ اسرائیلی حملوں پرخاموشی توڑنے میں ناکام
فلسطین کی جانب سے امداد کامطالبہ

اقوام متحدہ (United Nations) میں فلسطین کے مندوب ریاض منصور (Riyad Mansour) نے اسرائیلی شدید بمباری کے دوران غزہ کے لئے مزید انسانی امداد جمع کرنے کی عالمی تنظیم سے التجا کی ہے، کیونکہ سلامتی کونسل (Security Council) نے اپنا بیان جاری کیے بغیر اسرائیل کے حملوں کے بارے میں چوتھا اجلاس کیا۔اسرائیل سے غزہ عبور کرنے والے بین الاقوامی امدادی ٹرکوں کے قافلے کریم شالوم (Kerem Shalom) کو منگل کے روز فوری طور پر روک دیا گیا۔ اسرائیل نے اس علاقے پر مارٹر حملے (mortar attack) کا حوالہ دیتے ہوئے اسے دوبارہ بند کردیا۔


منصور نے نیویارک میں اقوام متحدہ کے صدر دفتر میں پریس کانفرنس میں کہا کہ ’’میں نے اقوام متحدہ سے غزہ پٹی (Gaza Strip) میں فلسطینی عوام کے تیئں انسانی امداد کے لئے ہنگامی کال جاری کرنے کا مطالبہ کیا ہے، لیکن ابھی تک وہاں سے کوئی تشفی بخش جواب نہیں ملا ہے‘‘۔


اسرائیل اور حماس کے درمیان مزاحمت 2014 کے بعد سے سب سے بھیانک سطح پر پہنچ گئی ہے اور بین الاقوامی غم و غصہ بھی پیدا ہورہا ہے ۔
اسرائیل اور حماس کے درمیان مزاحمت 2014 کے بعد سے سب سے بھیانک سطح پر پہنچ گئی ہے اور بین الاقوامی غم و غصہ بھی پیدا ہورہا ہے ۔


’’ہم اسرائیل کی جارحانہ اور نسلی تفریق پر مبنی حکومت کے تحت نہیں رہ سکتے۔ اس قبضے کو بہت جلد ہی ختم ہونا ہے اور وہ ہو کر رہے گا۔ ہمیں مشرقی یروشلم (east Jerusalem) کے ساتھ اپنی ریاست کی آزادی حاصل کرنے کی ضرورت ہے جہاں ہم وقار اور آزادی کے ساتھ رہ سکتے ہیں‘‘۔

غزہ میں گذشتہ ہفتے جمعہ سے جاری اسرائیلی فضائی حملوں میں 218 فلسطینی ہلاک ہوگئے ہیں، جن میں 63 بچے اور 36 خواتین شامل ہیں۔ فلسطین کی وزارت صحت (Palestinian Health Ministry) کے مطابق مجموعی طور پر 1500 فلسطینی زخمی ہوئے ہیں۔

  • کوئی بیان نہیں


اس دوران اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل (UN Security Council) نے اسرائیل کی جارحیت اور بھیانک تشدد پر مبنی کاررائیوں سے متعلق ایک ہفتہ کے دوران ہی چوتھا ہنگامی اجلاس منعقد کیا، لیکن کوئی اعلان جاری نہیں کیا گیا اور یہ بات چیت ایک گھنٹے سے بھی کم جاری رہی۔

ایک سفارت کار اور امریکی ایلچی لنڈا تھامس گرین فیلڈ (Linda Thomas-Greenfield) نے بند دروازے اجلاس کے دوران کہا کہ ’’ہم فیصلہ نہیں کرتے کہ ابھی کوئی عوامی اعلان جنگ بندی کے لیے مدد فراہم کرے گا‘‘۔انہوں نے کہا کہ ’’سلامتی کونسل کی مزید کارروائیوں کے سلسلے میں ہمیں اس بات کا اندازہ کرنا ہوگا کہ کیا کوئی عمل یا بیان اس تشدد کے خاتمے کے امکانات کو آگے بڑھائے گا بھی یا نہیں‘‘

متعدد سفارتکاروں نے اے ایف پی کو بتایا کہ چین، تیونس اور ناروے تینوں ممالک جو کونسل میں کارروائی کے لئے زور دے رہے ہیں، نے مذاکرات سے قبل دوسرے اراکین کو کوئی نیا مجوزہ بیان نہیں بھیجا۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: May 19, 2021 09:01 AM IST