உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستانی وزیر اعظم عمران خان کو مولانا فضل الرحمن کا مشورہ- پاکستان کو طالبان حکومت کو تسلیم کرنا چاہئے

    پاکستانی وزیر اعظم عمران خان کو مولانا فضل الرحمن کا مشورہ- پاکستان کو طالبان حکومت کو تسلیم کرنا چاہئے

    پاکستانی وزیر اعظم عمران خان کو مولانا فضل الرحمن کا مشورہ- پاکستان کو طالبان حکومت کو تسلیم کرنا چاہئے

    پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے صدر مولانا فضل الرحمن نے پاکستانی حکومت سے درخواست کی ہے کہ وہ جنگ زدہ افغانستان میں استحکام لانے کے لئے طالبان حکومت کو فوری طور پر منظوری دے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      لاہور: پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے صدر مولانا فضل الرحمن نے پاکستانی حکومت سے درخواست کی ہے کہ وہ جنگ زدہ افغانستان میں استحکام لانے کے لئے طالبان حکومت کو فوری طور پر منظوری دے۔ جیو نیوز ٹی وی نے اتوار کو ان کے حوالے سے کہا ’’ہمیں طالبان حکومت کو جلد از جلد ایک پرامن ملک اور افغانستان میں ایک مستحکم حکومت کے نظام کو یقینی بنانے کے لئے کی جارہی کوششوں میں تعاون کرنے منظوری دینی چاہیے‘‘۔




      مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ طالبان کی حکومت کو تسلیم کرنا افغانستان کو تسلیم کرنے جیسا ہے اور طالبان کی مدد کرنے کے لئے ان کی حکومت کو فوری طور پر منظوری دینا ضروری ہے۔
      مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ طالبان کی حکومت کو تسلیم کرنا افغانستان کو تسلیم کرنے جیسا ہے اور طالبان کی مدد کرنے کے لئے ان کی حکومت کو فوری طور پر منظوری دینا ضروری ہے۔

      مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ طالبان کی حکومت کو تسلیم کرنا افغانستان کو تسلیم کرنے جیسا ہے اور طالبان کی مدد کرنے کے لئے ان کی حکومت کو فوری طور پر منظوری دینا ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب چین اور روس کی نئی افغان حکمرانوں کے ساتھ تعلقات قائم کرنے میں دلچسپی لے رہے تھے،تب پاکستان کو بھی طالبان کے ساتھ اپنے رابطے برقرار رکھنے چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے افغانستان کے لوگوں کے ساتھ تاریخی تعلقات ہیں۔ انہوں نے کہا کہ افغان عوام کے ساتھ ہمارے تاریخی تعلقات رہے ہیں اور ہمیں وہاں امن و استحکام کا نظام شروع کرنے میں ان کی مدد کرنی چاہیے۔




      مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ طالبان کی حکومت کو تسلیم کرنا افغانستان کو تسلیم کرنے جیسا ہے اور طالبان کی مدد کرنے کے لئے ان کی حکومت کو فوری طور پر منظوری دینا ضروری ہے۔
      مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ طالبان کی حکومت کو تسلیم کرنا افغانستان کو تسلیم کرنے جیسا ہے اور طالبان کی مدد کرنے کے لئے ان کی حکومت کو فوری طور پر منظوری دینا ضروری ہے۔

      واضح رہے کہ 15 اگست کو طالبان نے افغانستان پر قبضہ کرلیا تھا۔ اس کے بعد سے چین اور پاکستان طالبان کو منظوری دیئے جانے کے حامی رہے ہیں۔ اب طالبان نے افغانستان میں عبوری حکومت بھی قائم کرلی ہے۔ حالانکہ ان دنوں طالبان میں اندرونی خانہ اختلافات کی بھی خبریں آرہی ہیں۔ خبروں کے مطابق، نائب وزیر اعظم ملا عبدالغنی برادر اور حقانی گروپ میں جھگڑا شروع ہوگیا ہے۔ صدارتی محل میں حقانی اور ملا عبدالغنی برادر کے مابین جھگڑا ہونے کے بعد ملا عبدالغنی برادر کے ہلاک ہونے کی بھی خبر آئی تھی۔ بعد میں انہوں نے آڈیو پیغام جاری کرکے موت کی خبر کی تردید کی تھی۔

      Published by:Nisar Ahmad
      First published: