உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پاکستان اتھارٹی کا عجیب و غریب حکم، ٹی وی پر نہ دکھائیں گلے ملنے اور پیار و محبت والے سین

    علامتی تصویر۔۔۔

    علامتی تصویر۔۔۔

    نئے حکم کے مطابق غیر ازدواجی تعلقات، فحش، بولڈ ڈریس، بیڈ سین اور شادی شدہ جوڑوں کے رومانوی مناظر اسلام کے خلاف ہیں۔ پاکستانی معاشرے کی تعلیمات اور ثقافت کے خلاف ہے۔

    • Share this:
      لاہور: پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی (PEMRA) کی جانب سے ایک عجیب و غریب نوٹیفکیشن نے ملک میں کھلبلی مچا دی ہے۔ پیمرا نے مقامی ٹی وی چینلز کو ڈراموں میں گلے ملنے کے مناظر (stop airing hug scenes in dramas) نشر کرنے سے روکنے کا حکم دیا ہے۔ اتھارٹی کا کہنا تھا کہ ڈرامے میں بڑھتی ہوئی فحاشی کی وجہ سے انہیں ملک بھر سے ایسے مواد کے خلاف شکایات موصول (complaints against such content) ہو رہی ہیں۔ اسی وجہ سے یہ قدم اٹھایا گیا ہے۔

      پیمرا (PEMRA) نے کیا کہا؟
      پیمرا نے نوٹیفکیشن میں کہا کہ معاشرے کے "اہم طبقے" کا خیال ہے کہ یہ ڈرامے پاکستانی معاشرے کی 'حقیقی تصویر' نہیں دکھا رہے ہیں۔ نئے حکم کے مطابق غیر ازدواجی تعلقات، فحش، بولڈ ڈریس، بیڈ سین اور شادی شدہ جوڑوں کے رومانوی مناظر اسلام کے خلاف ہیں۔ پاکستانی معاشرے کی تعلیمات اور ثقافت کے خلاف ہے۔

      اتھارٹی نے تمام ٹی وی چینلز کو ہدایت کی ہے کہ وہ ان ہاؤس مانیٹرنگ کمیٹی کے ذریعے ڈراموں کے مواد کا جائزہ لیں اور ناظرین اور ان کے خدشات کو مدنظر رکھتے ہوئے ان میں ترمیم یا ایڈٹ کریں۔ اس کے علاوہ تمام سیٹلائٹ ٹی وی لائسنسوں کو فوری اثر سے ڈراموں میں اس طرح کے مواد کو دکھانا بند کرنا ہو گا۔



      حمایت میں آئے لوگ
      قانونی اور انسانی حقوق کی پیشہ ور ریما عمر نے نوٹیفکیشن پر ردعمل دیتے ہوئے کہا، "پیمرا کو آخرکار کچھ تو صحیح کیا۔ شادی شدہ جوڑوں کے درمیان رومانوی مناظر اور محبت کے مناظر 'پاکستانی معاشرے کی حقیقی عکاسی' نہیں ہیں۔ یہ 'گلیمرائز' نہیں کیا جانا چاہئے۔ غیر ملکی اقدار کو ہم پر تھوپا جا رہا ہے جس کی حفاظت ہمیں کرنی ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: