ہوم » نیوز » عالمی منظر

پھانسی کی سزا کے خلاف عدالت کی پناہ میں گئے پرویز مشرف، لاہور ہائی کورٹ میں دائر کی عرضی

اسلام آباد کی خصوصی عدالت نے گزشتہ ہفتے 76 سال کے پرویزمشرف کو ملک سے غداری کے الزام میں موت کی سزا سنائی تھی۔

  • Share this:
پھانسی کی سزا کے خلاف عدالت کی پناہ میں گئے پرویز مشرف، لاہور ہائی کورٹ میں دائر کی عرضی
پاکستان کے سابق صدر پرویز مشرف۔ فائل فوٹو

اسلام آباد: پاکستان کے سابق فوجی تانا شاہ ریٹائرڈ جنرل پرویزمشرف نے خصوصی عدالت کےاس فیصلے کے خلاف جمعہ کوایک عدالت میں عرضی دائرکی، جس میں انہیں ملک سے غداری کا قصوروارٹھہراتےہوئے موت کی سزاسنائی گئی ہے۔ میڈیا رپورٹوں میں یہ اطلاع سامنےآئی ہے۔ اسلام آباد کی خصوصی عدالت نےگزشتہ ہفتے76 سالہ پرویزمشرف کوملک سےغداری کے الزام میں موت کی سزا سنائی تھی۔


لاہور ہائی کورٹ میں دائرکی عرضی


ڈان نیوزکی رپورٹ کے مطابق، پرویزمشرف کی طرف سے وکیل اظہرصدیقی نے جمعہ کو لاہورہائی کورٹ میں 86 صفحات کی عرضی داخل کی۔ اس میں وفاقی حکومت اوردیگرکو مدعا علیہ بنایا گیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق عرضی میں کہا گیا ہے کہ فیصلے میں کئی  تضادات اورمتضاد بیانات ہیں۔ اس میں کہا گیا ہےکہ خصوصی عدالت نے معاملے کی سماعت جلد بازی میں کی۔


بینچ 9 جنوری کو کرے گی سماعت

جسٹس مظاہرعلی اکبرنقوی کی صدارت والی مکمل بینچ 9 جنوری، 2020 کو عرضی پر سماعت کرے گی۔ ایکسپریس ٹریبیون کے مطابق، سابق صدرنے فیصلے کو ملتوی کرنے کی ہائی کورٹ سے اپیل کی ہے۔ پرویزمشرف اس وقت دبئی میں ہیں اوروہ کئی بیماریوں کا علاج کرا رہے ہیں۔ وہ پاکستان کی تاریخ میں پہلے فوجی حکمراں ہیں، جنہیں سزائے موت کی سزا دی گئی ہے۔ وہ سال 1999 میں اس وقت کے وزیراعظم نوازشریف کومعزول کرکےاقتدارپر قابض ہوئےاور2008 تک اقتدارسنبھالی۔
First published: Dec 27, 2019 07:25 PM IST