உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پرویز مشرف کی حالت نازک، سدھارکی امید نہیں، فیملی نےکہا- دعا کیجئے

    پاکستان کے سابق صدر پرویز مشرف (Pervez Musharraf) کی حالت نازک ہے، لیکن وہ وینٹیلیٹر پر نہیں ہیں۔ پرویز مشرف کے ٹوئٹر ہینڈل سے جاری اس پیغام میں کہا گیا ہے کہ وہ سنگین مرحلے سے گزر رہے ہیں، جہاں سے سدھار کی امید نہیں ہے۔

    پاکستان کے سابق صدر پرویز مشرف (Pervez Musharraf) کی حالت نازک ہے، لیکن وہ وینٹیلیٹر پر نہیں ہیں۔ پرویز مشرف کے ٹوئٹر ہینڈل سے جاری اس پیغام میں کہا گیا ہے کہ وہ سنگین مرحلے سے گزر رہے ہیں، جہاں سے سدھار کی امید نہیں ہے۔

    پاکستان کے سابق صدر پرویز مشرف (Pervez Musharraf) کی حالت نازک ہے، لیکن وہ وینٹیلیٹر پر نہیں ہیں۔ پرویز مشرف کے ٹوئٹر ہینڈل سے جاری اس پیغام میں کہا گیا ہے کہ وہ سنگین مرحلے سے گزر رہے ہیں، جہاں سے سدھار کی امید نہیں ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: پاکستان کےسابق صدر پرویز مشرف (Pervez Musharraf) کی حالت نازک ہے، لیکن وہ وینٹیلیٹر پر نہیں ہیں۔ وہ اپنی بیماری (Amyloidosis) کے سبب گزشتہ تین ہفتے سے اسپتال میں داخل ہیں۔ ان کی فیملی نے یہ پیغام ٹوئٹر (Twitter) پر دیا ہے۔ پرویز مشرف کے ٹوئٹر ہینڈل سے جاری اس پیغام میں کہا گیا ہے کہ وہ سنگین مرحلے سے گزر رہے ہیں، جہاں سے سدھار کی امید نہیں ہے۔ ان کے اعضا خراب ہو رہے ہیں۔ ایسے میں ان کے روزمرہ کی زندگی میں آسانی ہو، اس کے لئے دعا کیجئے۔ فیملی کا یہ پیغام اس لئے سامنے آیا ہے، کیونکہ یہ افواہ تھا کہ پرویز مشرف کا انتقال ہوگیا ہے۔

      پرویز مشرف مارچ 2016 سے دبئی میں رہ رہے ہیں۔ پرویز مشرف نے 1999 سے 2008 پاکستان پر اقتدار کیا تھا۔ حالانکہ تین نومبر، 2007 کو ملک میں ایمرجنسی لگانے اور دسمبر 2007 تک آئین کو معطل کرنے کے جرم میں ان پر ملک سے غداری کا مقدمہ چلا تھا اور سال 2014 میں انہیں قصوروار قرار دیا گیا تھا۔ انہیں پھانسی کی سزا بھی سنائی گئی تھی۔



      انتقال کی خبر نے مچائی کھلبلی

      دراصل ایک ٹی وی چینل جی این این نے دعویٰ کیا تھا کہ پاکستان کے سابق صدر پرویز مشرف کا دل کا دورہ پڑنے سے انتقال ہوچکا ہے۔ اس خبر کے سامنے آتے ہی کھلبلی مچ گئی تھی۔ پاکستان سے لے کر دبئی تک اس خبر کو لے کر جانکاری جمع کی جارہی تھی۔ دوسری جانب، سوشل میڈیا پر بھی اس طرح کی خبریں وائرل ہوگئی تھیں۔ اس کے بعد فیملی نے سامنے آکر پرویز مشرف کے آفیشیل ہینڈل سے ٹوئٹ کرکے جانکاری دی ہے۔

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: