உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    UNGA میں وزیر اعظم مودی کا نام لئے بغیر چین پر حملہ، پاکستان کو دہشت گردی پر سنائی کھری کھری

    UNGA میں وزیر اعظم مودی کا نام لئے بغیر چین پر حملہ، پاکستان کو دہشت گردی پر سنائی کھری کھری ۔ تصویر : اے این آئی ۔

    UNGA میں وزیر اعظم مودی کا نام لئے بغیر چین پر حملہ، پاکستان کو دہشت گردی پر سنائی کھری کھری ۔ تصویر : اے این آئی ۔

    PM Narendra Modi Address UNGA : وزیر اعظم مودی نے پاکستان کا نام لئے بغیر کہا کہ جو ملک دہشت گردی کو سیاسی آلے کے طور پر استعمال کررہے ہیں ، انہیں یہ سمجھنا ہوگا کہ دہشت گردی ان کیلئے بھی اتنا ہی بڑا خطرہ ہے ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      نیویارک : وزیر اعظم مودی نے آج اقوام متحدہ جنرل اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان اور چین کا نام لئے بغیر جم کر نشانہ سادھا ۔ وزیر اعظم نے پاکستان کا نام لئے بغیر کہا کہ جو ملک دہشت گردی کو سیاسی آلے کے طور پر استعمال کررہے ہیں ، انہیں یہ سمجھنا ہوگا کہ دہشت گردی ان کیلئے بھی اتنا ہی بڑا خطرہ ہے ۔ یہی نہیں ، وزیر اعظم مودی نے سمندری سیکورٹی اور توسیع پسندی کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ سمندر سبھی کی مشترکہ وراثت ہے اور اس کو بچانے کی ضرورت ہے ۔

      وزیر اعظم موی نے اقوام متحدہ جنرل اسمبلی کے 76 ویں اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ یہ یقینی بنایا جانا ضروری ہے کہ افغانستان کی سرزمین کا استعمال دہشت گردی کو پھیلانے کیلئے نہیں ہو یا پھر وہاں دہشت گردانہ واقعات نہ ہوں ۔ ہمیں اس بات کیلئے بھی محتاط رہنا ہوگا کہ وہاں کی نازک صورتحال کا کوئی ملک اپنے مفاد کیلئے ٹول کی طرح استعمال نہ کرے ۔


      وزیر اعظم مودی نے اشاروں ہی اشاروں میں پاکستان کو کافی کھری کھوٹی سنائی ۔ انہوں نے کہا کہ جو ملک دہشت گردی کا سیاسی ٹول کے طور پر استعمال کرتے ہیں ، شاید وہ بھول رہے ہیں کہ دہشت گردی ان کیلئے بھی اتنا ہی بڑا خطرہ ہے ، ہمیں اس وقت افغانستان کے عوام ، خواتین ، بچوں اور اقلیتوں کی مدد کرنے ضرورت ہے اور اس میں ہمیں اپنا فرض نبھانا ہوگا ۔

      وزیر اعظم مودی نے چین پر بھی اشاروں ہی اشاروں میں زوردار حملہ کیا ۔ سمندر کے ذریعہ کاروبار کا تذکرہ کرتے ہوئے وزیر اعظم مودی نے کہا کہ سمندر ہماری مشترکہ وراثت ہے ، اس لئے ہمیں دھیان رکھنا ہوگا کہ سمندر کے وسائل کا استعمال کریں ، اس کو غلط استعمال نہ کریں ۔ سمندر بین الاقوامی کاروبار کی لائف لائن ہے اور اس سے توسی پسندی کی لڑائی سے بچنا ہوگا ۔ اس کو بچانے کیلئے اقوام متحدہ قوانین کے مطابق بین الاقوامی برادری کو آواز اٹھانی ہوگی ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: