وزیراعظم مودی کا اقوام متحدہ کو سیدھا جواب، جموں وکشمیرسے آرٹیکل 370 ہٹانا ہمارا داخلی معاملہ

وزیراعظم مودی نے واضح کیا کہ جموں وکشمیرسے دفعہ 370 ہٹانا ہندوستان کا داخلی معاملہ ہے۔ وزیراعظم مودی نے کہا کہ ہندوستان کی طرف سے ایسا کوئی بھی قدم نہیں اٹھایا جارہا ہے، جس سے کسی بھی طرح کی بدامنی کی صورتحال پیدا ہو۔

Aug 26, 2019 09:45 PM IST | Updated on: Aug 26, 2019 09:48 PM IST
وزیراعظم مودی کا اقوام متحدہ کو سیدھا جواب، جموں وکشمیرسے آرٹیکل 370 ہٹانا ہمارا داخلی معاملہ

وزیراعظم مودی نے اقوام متحدہ کو سیدھا جواب دیتے ہوئے کہا ہے کہ جموں وکشمیرسے آرٹیکل 370 ہٹانا ہمارا داخلی معاملہ ہے۔

فرانس کے شہربی آرتزمیں چل رہی جی 7 سربراہی اجلاس میں ہندوستان کے وزیراعظم نریندرمودی نےاقوام متحدہ کےسکریٹری جنرل سکریٹری اینٹونیوگٹیریس سےاتوارکوملاقات کی۔ اس بات چیت میں وزیراعظم نریندرمودی نے واضح کیا کہ جموں وکشمیرسےدفعہ 370 ہٹانا ہندوستان کا داخلی معاملہ ہے۔ وزیراعظم مودی نےکہا کہ ہندوستان کی طرف سے ایسا کوئی بھی قدم نہیں اٹھایا جارہا ہے، جس سےکسی بھی طرح بدامنی کی صورتحال پیدا ہو۔

جی 7 سربراہی اجلاس کے باہروزیراعظم نریندرمودی نے اقوام متحدہ کے جنرل سکریٹری سے یہ بھی کہا کہ جموں وکشمیرمیں پابندیاں لگانےکی بڑی وجہ دہشت گردی ہے۔ وزیراعظم مودی نےکہا کہ ریاست میں دہشت گردانہ واقعات کوروکنےاورلا اینڈ آرڈربنائے رکھنے کے لئےجموں وکشمیرمیں پابندیاں لگائی گئی ہیں۔ وزیراعظم مودی نےکہا کہ یہ پابندیاں بھی دھیرے دھیرے ہٹائی جارہی ہیں۔

Loading...

خارجہ سکریٹری وجے کےگوکھلے نے پیرکونامہ نگاروں کو وزیراعظم مودی کے تین ممالک کے دورہ اورجی 7 سربراہی اجلاس میں ان کی شرکت کے بارے میں بتایا۔ گوکھلے نےکہا کہ وزیراعظم نریندرمودی کواس اجلاس میں مدعو کرنےکا یواین سکریٹری جنرل کا مقصد ان سے موسمیاتی تبدیلی پربات چیت کرنےکا تھا۔ وزیراعظم مودی نےانہیں یقین دہانی کرائی کہ ہندوستان اس موضوع پران کے ساتھ کھڑا ہے۔

وزیراعظم مودی نے واضح کیا ہندوستان کا رخ

انہوں نے بتایا کہ کشمیرسے منسلک موضوع اورآرٹیکل 370 ہٹانےکولے کرہندوستان کا رخ واضح کرتے ہوئے وزیراعظم نریندرمودی نے کہا کہ دفعہ 370 ہٹانا ہندوستان کےآئین کے تحت آتا ہے۔ بین الاقوامی سطح کی بات کریں توہندوستان ریاست میں ایسا کوئی بھی قدم نہیں اٹھا رہا ہے، جس سے علاقائی امن وامان اوراستحکام کونقصان پہنچے۔ وزیراعظم نے بتایا کہ جموں وکشمیرمیں حالات دھیرے دھیرے بہترہورہے ہیں۔ انہوں نےبتایا کہ ریاست کے کئی علاقوں سے پابندیاں پوری طرح سےہٹا دی گئی ہیں جبکہ کچھ مقامات پرابھی بھی جزوی پابندی ہے۔ وزیراعظم مودی نے واضح کیا کہ جموں وکشمیرکی عوام 30 سالوں سے بھی زیادہ وقت سے دہشت گردی کوجھیل رہی ہےاوریہ ایک اہم خطرہ بھی ہے، اس لئے اس بات کودھیان میں رکھتے ہوئے پابندیاں عائد کیگئی ہیں، جس سےلا اینڈ آرڈربرقراررہے۔

 

Loading...