ہوم » نیوز » عالمی منظر

وزیر اعظم مودی کے ہاتھوں افغانستان میں سلمی باندھ کا افتتاح، تین دہائی پرانا خواب شرمندہ تعبیر

ہرات ۔ وزیر اعظم نریندر مودی اور افغان صدر اشرف غنی نے آج یہاں افغان- ہند دوستی باندھ (سلمی ڈیم ) کا افتتاح کرکے علاقے کے لوگوں کا تین دہائی پرانا خواب سچ کر دیا۔

  • UNI
  • Last Updated: Jun 04, 2016 05:17 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
وزیر اعظم مودی کے ہاتھوں افغانستان میں سلمی باندھ کا افتتاح، تین دہائی پرانا خواب شرمندہ تعبیر
ہرات ۔ وزیر اعظم نریندر مودی اور افغان صدر اشرف غنی نے آج یہاں افغان- ہند دوستی باندھ (سلمی ڈیم ) کا افتتاح کرکے علاقے کے لوگوں کا تین دہائی پرانا خواب سچ کر دیا۔

ہرات ۔  وزیر اعظم نریندر مودی اور افغان صدر اشرف غنی نے آج یہاں افغان- ہند دوستی باندھ (سلمی ڈیم ) کا افتتاح کرکے علاقے کے لوگوں کا تین دہائی پرانا خواب سچ کر دیا۔ مسٹر نریندر مودی اور مسٹر اشرف غنی نے ہرات میں غازی امان اللہ خان ہال میں ریموٹ کنٹرول کے ذریعہ یہاں سے تقریبا 150 کلو میٹر دور واقع اس باندھ کو افغان عوام کے لئے وقف کیا۔

افغان صدر نے اس کیلئے ہندوستان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان کی مدد سے یہاں کی عوام کا تیس سال پرانا خواب شرمندہ تعبیر ہو گیا۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان اور افغانستان کی دوستی ایک نئے دور میں داخل ہوگئی ہے۔ اس باندھ سے تعاون اور خوشحالی کا نیا باب شروع ہوگا۔


مسٹر مودی نے مسٹر غنی کے جذبات پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ یہ باندھ نہ صرف اس علاقے کے لوگوں کی خوشحالی کے لیے ہے بلکہ افغانستان کے  مستقبل کے بارے میں لوگوں کی امیدوں کو پھر سے بحال کرنے کے لئے ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان افغانستان کے لوگوں کے خوابوں کو پورا کرنا اپنا فرض سمجھتا ہے اور وسائل اور صلاحیتوں کی کمی کے باوجود اس کے عزم اور قوت ارادی میں کوئی کمی نہیں ہے۔


افغان صدر نے آج صبح مسٹرنریندر مودی کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ "آپ کا اپنے دوسرے گھر میں خیر مقدم ہے "۔ انہوں نے ہندوستان اور افغانستان کے درمیان ترقیاتی شراکت کے استحکام کا خاکہ پیش کرتے ہوئے کہا کہ افغان عوام کے درمیان ہندوستان کی شناخت سڑکوں، باندھوں اور 200 سے زیادہ چھوٹے ترقیاتی منصوبوں سے ہے۔ مسٹر مودی نے کہا کہ "آج ہم آپ کے ساتھ افغان عوام کے خوشحال مستقبل کے عزم کا احترام کرنے کے لئے آئے ہیں"۔ ​​انہوں نے کہا کہ "یہ باندھ کوئی اینٹ اور گارے سے نہیں بلکہ ہماری دوستی کے تئيں آپ بھروسے اور افغانیوں اور ہندوستانیوں کی بہادری سے بنا ہے "۔ انہوں نے کہا کہ اس باندھ سے تقریبا ڈھائی لاکھ گھروں میں روشنی ہی نہیں ہوگی بلکہ ان سے افغانستان کے بہتر اور روشن مستقبل کی امید بھی پید ا ہوگی۔ مسٹر مودی نے چشتی شریف سے ہندوستان پہنچنے والی صوفی روایت کا بھی ذکر کیا اور کہا کہ" اجمیر، دہلی اور فتح پور سیکری میں درگاہوں پر چشتی سلسلے نے صدیوں پہلے ہمیں جوڑا تھا۔ اسی طرح سے یہ باندھ بھی ہمارے تعلقات كو نئی توانائی دے گا"۔ مسٹر مودی نے کہا کہ " آپ کے خواب پورا کرنا ہمارا فرض ہے۔ ہندوستان کی صلاحیت محدود ہو سکتی ہے، مگر ہماری وابستگی کی کوئی حد نہیں ہے۔ ہمارے وسائل کم ہو سکتے ہیں لیکن ہماری قوت ارادی غیر محدود ہے"۔ 


وزیر اعظم نے کہا کہ دونوں ممالک کی دوستی کے مثبت نتائج صرف کابل، قندھار، ہرات اور مزار شریف میں نہیں بلکہ افغانستان کے ہر حصے میں پہنچانے کی ہندوستان کی خواہش ہے۔ انہوں نے ایران میں حال ہی میں طے پانے والے چابهار بندرگاہ سے مال کی نقل و حمل کے لیے ہند-افغانستان- ایران ٹرانزٹ اور نقل و حمل معاہدے کو افغانستان کی خوشحالی کا نیا باب قرار دیا ا اور کہا کہ اس سے افغان عوام کی ترقی مزید تیز ہو سکے گی۔


قابل ذکر ہے کہ گزشتہ ماہ ایران کے دارالحکومت تہران میں چابهار بندرگاہ کے اہم منصوبے سے متعلق ہندوستان - افغانستان -ایران سہ فریقی نقل و حمل اور ٹرانزٹ معاہدے پر کی گئي ہے۔ جس سے ارد گرد زمینی راستوں سے گھرے ہوئے افغانستان کو بین الاقوامی کاروبار کو سمندری راستے قابل رسائی بنانے میں مدد ملے گی۔ مسٹر نریندر مودی نے گزشتہ دنوں ہرات میں ہندوستانی قونصل خانے پر دہشت گردوں کے حملے میں شہید ہو نے والے افغان سلامتی دستہ کے جوانوں کو خراج تحسین بھی عقیدت پیش کیا اور جلد ہی شروع ہونے والے رمضان المبارک کے مقدس مہینے کی نیک خواہشات کا اظہار کیا۔


اس سے پہلے مسٹر مودی کے ہرات پہنچنے پر میں شاندار استقبال کیا گیا۔ ہرات کے ہوائی اڈے پر افغانستان کے صدر نے وزیر اعظم کا استقبال کیا اور بچوں نے پھولوں کے گلدستے پیش کر کے ان کو خوش آمدید کہا ۔ ہوائی اڈے سے مسٹر غنی اور مسٹر مودی ہرات صوبے کے گورنر ہاؤس پہنچے جہاں افغان بچوں کے ایک گروپ نے ان کا سنسکرت میں خوش آمدید کے ترانہ کے ساتھ استقبال کیا۔ بعد میں دونوں لیڈرغازی امان اللہ خان ہال پہنچے جہاں افغان -ہند دوستی باندھ (سلمی ڈیم ) کی افتتاحی تقریب منعقد کی گئی۔ ہند- تبت بارڈر پولس کا بینڈ بھی وہاں موجود تھا جس نے پروگرام کا آغاز ہونے پر قومی ترانے کی دھن بجائی۔ بعد میں افغان قومی ترانے کی دھن بجائی گئی۔

First published: Jun 04, 2016 04:17 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading