உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اسرائیل کے دورہ سے پاکستان میں سیاسی ہنگامہ، پاکستان کے کسی بھی وفد کا دورہ اسرائیل کی تردید

    پاکستانی دفترخارجہ کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا ہے کہ پاکستان کے کسی وفدکے دورہ اسرائیل کا تصور واضح طور پر مسترد کرتے ہیں، زیربحث دورے کا اہتمام غیر ملکی این جی او نے کیا تھا، جو پاکستان میں مقیم نہیں۔

    پاکستانی دفترخارجہ کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا ہے کہ پاکستان کے کسی وفدکے دورہ اسرائیل کا تصور واضح طور پر مسترد کرتے ہیں، زیربحث دورے کا اہتمام غیر ملکی این جی او نے کیا تھا، جو پاکستان میں مقیم نہیں۔

    پاکستانی دفترخارجہ کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا ہے کہ پاکستان کے کسی وفدکے دورہ اسرائیل کا تصور واضح طور پر مسترد کرتے ہیں، زیربحث دورے کا اہتمام غیر ملکی این جی او نے کیا تھا، جو پاکستان میں مقیم نہیں۔

    • Share this:

      اسلام آباد: پاکستانی دفترخارجہ کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا ہے کہ پاکستان کے کسی وفدکے دورہ اسرائیل کا تصور واضح طور پر مسترد کرتے ہیں، زیربحث دورے کا اہتمام غیر ملکی این جی او نے کیا تھا، جو پاکستان میں مقیم نہیں۔


      پاکستانی ترجمان دفترخارجہ کا کہنا ہے کہ مسئلہ فلسطین پر پاکستان کا مؤقف واضح اور غیر مبہم ہے، پاکستان فلسطینی عوام کے ناقابل تنسیخ حق خود ارادیت کی مستقل حمایت کرتا ہے۔




       ترجمان کا کہنا ہےکہ خطے میں دیرپا امن کے لیے آزاد، قابل عمل فلسطینی ریاست کا قیام ناگزیر ہے، ہماری پالیسی میں ایسی کوئی تبدیلی نہیں آئی جس پرمکمل قومی اتفاق رائےہو۔


      خیال رہےکہ اسرائیل کے صدر اسحاق ہرزوگ  نے عالمی اقتصادی فورم میں بات چیت کرتے ہوئے بتایا تھا کہ گزشتہ ہفتے ان سے دو وفود نے ملاقات کی جن میں امریکا میں مقیم دو پاکستانی بھی شامل تھے۔ اسرائیلی صدر کا کہنا تھا کہ پاکستانی وفد سے ان کی ملاقات بے حد خوش آئند رہی۔



      Published by:Nisar Ahmad
      First published: