உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    PM Modi: صدر جو بائیڈن اور پی ایم مودی کے درمیان آج دوطرفہ بات چیت، کیا ہوگی خاص بات؟ جانیے تفصیل

    سب کی نظریں منگل کو جاپانی دارالحکومت میں ہونے والی کواڈ سمٹ پر ہوں گی۔

    سب کی نظریں منگل کو جاپانی دارالحکومت میں ہونے والی کواڈ سمٹ پر ہوں گی۔

    یہ بات بھی اہم ہے کہ ہندوستان، روس اور یوکرین کے درمیان تنازع کے پرامن حل کے لیے بات چیت کا پرزور حامی رہا ہے۔ ہندوستان نے اب تک یوکرین روس تنازعہ پر سخت موقف اختیار کرنے سے گریز کیا ہے۔

    • Share this:
      تازہ ترین پیش رفت کے مطابق امریکی صدر جو بائیڈن (Joe Biden) اور وزیر اعظم مودی (PM Modi) آج کواڈ سمٹ کے موقع پر دو طرفہ بات چیت کرنے والے ہیں۔ امریکی قومی سلامتی کے مشیر کے مطابق دونوں رہنما تعمیری اور سیدھی سادی بات چیت کریں گے جس میں یوکرین میں جاری تنازع پر بھی بات ہوگی۔

      یہ بات بھی اہم ہے کہ ہندوستان، روس اور یوکرین کے درمیان تنازع کے پرامن حل کے لیے بات چیت کا پرزور حامی رہا ہے۔ ہندوستان نے اب تک یوکرین روس تنازعہ پر سخت موقف اختیار کرنے سے گریز کیا ہے۔

      وزیر اعظم نریندر مودی اتوار کی رات کواڈ چوٹی کانفرنس میں شرکت کے لیے جاپان روانہ ہوئے۔ وہ پیر کی صبح ٹوکیو پہنچے ۔ ہندوستانی نژاد لوگوں نے وزیر اعظم کا پرتپاک استقبال کیا۔ ہوائی اڈے پر 'مودی-مودی' کے نعرے لگائے گئے۔ اپنے دورہ جاپان کے دوران وزیر اعظم نریندر مودی نے ہندوستانی کمیونٹی کے لوگوں سے خطاب کیا۔ اس موقع پر ان کا کہنا تھا کہ میں جب بھی جاپان آتا ہوں تو دیکھتا ہوں کہ آپ کی محبتوں کی بارش ہر مرتبہ بڑھتی ہی جاتی ہے۔
      یہ بھی پڑھیں:Disha Patani Video:دیشاپٹانی کی ان اداوں پرہورہی ہے بحث،اپنے حسن سے ایسے گرائیں بجلیاں

      وزیر اعظم مودی نے کہا کہ آپ میں سے کئی ساتھی کئی سالوں سے یہاں آباد ہیں۔ جاپان کی زبان، لباس، ثقافت اور کھانا پینا، ایک طرح سے آپ کی زندگی کا بھی حصہ بن گیا ہے ۔ یہ ہم لوگوں کی خاصیت ہے کہ ہم کام کی سرزمین سے تن من سے جڑ جاتے ہیں ، کھپ جاتے ہیں، لیکن مادر وطن کی جڑوں سے جو تعلق ہے، اس سے کبھی دوری نہیں بننے دیتے ہیں ۔

       

      مزید پڑھیں: Nora Fatehi: جب نورا فتیحی نے اس وجہ سے ہندوستان چھوڑنے کا کرلیا تھا ارادہ، چھلکا تھا درد

      دریں اثنا دیگر تین کواڈ ممالک نے روس کے یوکرین پر حملہ کرنے کے اقدام پر تنقید کی ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: