ہوم » نیوز » عالمی منظر

امن بردار فوج کے تعاون کیلئے ہندستان پرعزم ، 850 اضافی فوجی جوان تعینات کریگا

نیویارک۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے اقوام متحدہ کی امن بردار فوج کو تعاون دینے کے تئیں ہندستان کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے موجودہ اور نئے آپریشن میں 850 اضافی ہندستانی فوجیوں کو تعینات کرنے اور خواتین کی زیادہ نمائندگی والی پولیس ٹکڑیاں تعینات کرنے کا اعلان کیا۔

  • Share this:
امن بردار فوج کے تعاون کیلئے ہندستان پرعزم ، 850 اضافی فوجی جوان تعینات کریگا
نیویارک۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے اقوام متحدہ کی امن بردار فوج کو تعاون دینے کے تئیں ہندستان کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے موجودہ اور نئے آپریشن میں 850 اضافی ہندستانی فوجیوں کو تعینات کرنے اور خواتین کی زیادہ نمائندگی والی پولیس ٹکڑیاں تعینات کرنے کا اعلان کیا۔

نیویارک۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے اقوام متحدہ کی امن بردار فوج کو تعاون دینے کے تئیں ہندستان کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے موجودہ اور نئے آپریشن میں 850 اضافی ہندستانی فوجیوں کو تعینات کرنے اور خواتین کی زیادہ نمائندگی والی پولیس ٹکڑیاں تعینات کرنے کا اعلان کیا۔

مسٹر مودی نے امریکی صدر بارک اوبامہ کی میزبانی میں منعقدہ اقوام متحدہ کی امن بردار فوج کی کانفرنس میں کہا کہ محنت و مشقت اور قربانی ہندستان کی روایت رہی ہے اور یہی وجہ ہے کہ اقوام متحدہ کی امن بردار فوج میں ہندستانی جوانوں کی حصہ داری سب سے زیادہ رہی ہے۔ دوسری عالمی جنگ میں ہندستانی فوجیوں کی قربانی کا ذکر کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ اس وقت 25 لاکھ ہندستانی فوجیوں نے حصہ لیا تھا، جن میں 24 ہزار شہید ہوگئے اور تقریباً آدھے لاپتہ۔

مسٹر مودی نے امن بردار فوج کو مضبوط بنانے کے تئیں ملک کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ ہندستان موجودہ اور نئے آپریشن میں 850 اضافی فوجی تعینات کریگا۔ انہوں نے بتایا کہ ہندستان امن کیلئے جاری آپریشن میں ڈاکٹر ، انجینئر، الیکٹریشن، اطلاعاتی ٹکنالوجی، بجلی اور الیکٹرانکس وٖغیرہ شعبوں کے پیشہ وروں کو بھی بھیجے گا۔ تین اضافی پولیس اکائیاں بھی تعینات کی جائیں گی جن میں بیشتر عورتوں کی نمائندگی ہوگی۔

مسٹر مودی نے امن بردار فوج کی ذمہ داریوں کی بدلتی ہوئی ساخت کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اب امن بردار فوجیوں کو صرف امن و سلامتی کیلئے ہی نہیں طلب کیا جاتا بلکہ کئی دیگر چیلنجوں سے نمٹنے کیلئے بھی انکی خدمات حاصل کی جاتی ہیں۔ مسٹر مودی نے کہا کہ امن بردار فوجیوں کی مانگ آج بڑھ گئی ہے لیکن وسائل کی کمی ہے۔

First published: Sep 29, 2015 08:23 AM IST