ہوم » نیوز » عالمی منظر

عرب وزرائے خارجہ نے ایران پرعلاقائی سلامتی کو نقصان پہنچانے کا الزام لگایا

قاہرہ۔ عرب وزرائے خارجہ نےایران میں سعودی سفارتی مشنوں پر حملوں کی مذمت کی اور خبردار کیا کہ اگر اس نے عرب ممالک کے داخلی امور میں مداخلت جاری رکھی تو اسے اور زیادہ مخالفت کا سامنا کرنا پڑے گا۔

  • UNI
  • Last Updated: Jan 11, 2016 06:21 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
عرب وزرائے خارجہ نے ایران پرعلاقائی سلامتی کو نقصان پہنچانے کا الزام لگایا
قاہرہ۔ عرب وزرائے خارجہ نےایران میں سعودی سفارتی مشنوں پر حملوں کی مذمت کی اور خبردار کیا کہ اگر اس نے عرب ممالک کے داخلی امور میں مداخلت جاری رکھی تو اسے اور زیادہ مخالفت کا سامنا کرنا پڑے گا۔

قاہرہ۔  عرب وزرائے خارجہ نےایران میں سعودی سفارتی مشنوں پر حملوں کی مذمت کی اور خبردار کیا کہ اگر اس نے عرب ممالک کے داخلی امور میں مداخلت جاری رکھی تو اسے اور زیادہ مخالفت کا سامنا کرنا پڑے گا۔ سنی سعودی عرب اور شیعہ ایران کے درمیان 2 جنور ی کو شیعہ عالم نمر النمر کی سزائے موت کے بعد سے  کشیدگی بہت بڑھ چکی ہے۔ پورے مشرق وسطی میں شیعہ اس واقعہ سے برہم ہیں۔


اس کےجواب میں ایرانی مظاہرین تہران میں سعودی سفارت خانہ میں اور مشہد کےقونصل خانہ میں گھس گئے تھے جس سے مشتعل ہوکر سعودی عرب نے ایران سے تعلقات منقطع کرلئے ہیں۔ دیگر عرب ممالک نے بھی ایران سے اپنے سفیر واپس بلالئے اور متحدہ عرب امارات نے سعودی عرب کا ساتھ دیتے ہوئے ایران کے ساتھ تعلقات کم درجہ کے کرلئے ہیں۔


امارات کے وزیر خارجہ شیخ عبداللہ بن زیاد النیہان نے قاہرہ میں ہنگامی عرب لیگ میٹنگ کے بعد کہا ہے کہ ’’ایران کو فیصلہ کرنا ہے کہ وہ کس طرح کا ہمسایہ بننا چاہتا ہے اچھا پڑوسی یا افراتفری والا پڑوسی۔ فی الحال وہ ہنگامہ کرنے والا پڑوسی بنا ہوا ہے۔ سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر نے کہا کہ تجارتی اور سفارتی تعلقات منقطع کرنا پہلا قدم ہے اور ان کا ملک علاقائی اور بین الاقوامی اتحادیوں کے ساتھ مل یہ مشورہ کرے گا کہ ایران کے خلاف مزید کیا کارروائی کی جائے۔


جبیر نے اخباری کانفرنس میں کہا ’’اگر ایران دہشت گردی، فرقہ پرستی اور تشدد کی حمایت جاری رکھتا ہے تو اسے تمام عرب مالک کی مخالفت کا سامنا کرنا پڑے گا۔میٹنگ کے اختتام پر جو بیان تقسیم کیا گیا اس میں عرب لیگ نے بحرین میں جنگجو گروپ کا پردہ فاش کرنے کا بھی حوالہ دیا جو ایران کے پاسداران انقلاب کی حمایت یافتہ تھا۔ لبنان کے سوا عرب لیگ کے تمام ممبران نے بیان کے حق میں ووٹ کیا۔ لبنان میں ایران نواز حزب اللہ طاقتور سیاسی قوت ہے۔

First published: Jan 11, 2016 04:20 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading