உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ملکہ برطانیہ الزبتھ دوم کی آخری رسومات 19 ستمبر کو طئے، ملک بھر میں 4 دن تک ہوگا عوامی دیدار

    تصویر ٹوئٹر The Royal Butler

    تصویر ٹوئٹر The Royal Butler

    Queen Elizabeth II: بکنگھم پیلس کے بیان میں کہا گیا ہے کہ لینگ ان اسٹیٹ (آخری دیدار کی شاہی روایت) کے دوران عوام کو ملکہ برطانیہ کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے ویسٹ منسٹر ہال کا دورہ کرنے کا موقع ملے گا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • inter, Indiaukukuk
    • Share this:
      بکنگھم پیلس نے ہفتے کے روز اعلان کیا کہ ملکہ الزبتھ دوم (Queen Elizabeth II) کی سرکاری رسومات لندن کے ویسٹ منسٹر ایبی میں 19 ستمبر کو مقامی وقت کے مطابق صبح 11 بجے ہوگی۔ آنجہانی برطانوی ملکہ کا ویسٹ منسٹر ہال میں چار دن تک دیدار کرایا جائے گا تاکہ عوام ان کا آخری دیدار کرے سکے۔ بکنگھم پیلس کے بیان میں کہا گیا ہے کہ لینگ ان اسٹیٹ (آخری دیدار کی شاہی روایت) کے دوران عوام کو ملکہ برطانیہ کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے ویسٹ منسٹر ہال کا دورہ کرنے کا موقع ملے گا۔

      پیر 19 ستمبر کی صبح لینگ ان سٹیٹ اس نے کہا کہ تابوت کو پیلس آف ویسٹ منسٹر سے ویسٹ منسٹر ایبی تک جلوس میں لے جایا جائے گا، جہاں سرکاری رسومات ادا کی جائیں گی۔

      ملکہ الزبتھ دوم کا تابوت جلوس کی شکل میں ویسٹ منسٹر ایبی سے لندن کے ویلنگٹن آرچ تک ونڈسر کے لیے آگے بڑھے گا۔ ونڈسر میں اسٹیٹ ہرس جلوس کے طور پر ونڈسر کیسل میں سینٹ جارج چیپل تک جائے گی، جو بادشاہ کی آخری آرام گاہ ہے۔ برطانیہ کی سب سے طویل عرصے تک حکمرانی کرنے والی ملکہ الزبتھ دوئم 70 سال حکومت کرنے کے بعد جمعرات کو اسکاٹ لینڈ کے بالمورل کیسل میں انتقال کر گئیں۔ وہ 96 سال کی تھیں۔

      یہ بھی پڑھیں:

      صدر جمہوریہ دروپدی مرمو نے کیا غلام علی کو Rajya Sabha کے لئے نامزد، کشمیر سے رکھتے ہیں تعلق

      یہ بھی پڑھیں:

      ملکہ برطانیہ الزبتھ دوم کے شوہر شہزادہ فلپ کا 99 برس کی عمر میں انتقال



      واضح رہے کہ پروٹوکول کے مطابق ملکہ برطانیہ کے بڑے بیٹے 73 سالہ شہزادہ چارلس (Prince Charles) کو فوری طور پر بادشاہ بنایا گیا ہے۔ دی پرنس آف ویلز شہزادہ چارلس نے پہلے ڈیانا اسپینسر سے شادی کی لیکن بعد میں علیحدگی ہو گئی۔ ڈیانا کی موت کے بعد انھوں نے 2005 میں کیملا پارکر باؤلز سے شادی کی۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: