உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    یوکرین میں لوٹی جارہی خواتین کی عزت، حاملہ نہ ہو جائیں اس لئے بانٹی جارہی ہیں مانع حمل کی گولیاں

    russia ukraine latest: ۔ روسی جارحیت سے سب سے زیادہ متاثرہ یوکرائنی علاقوں میں پیدائش پر قابو پانے کی گولیوں کے تقریباً 3,000 پیکٹ بھیجے گئے ہیں۔   یوکرین کے اسپتالوں میں عصمت دری کا شکار ہونے والوں کی تعداد کے اندراج کے بعد چیریٹی تنظیمیں ہنگامی مانع حمل ادویات بھیجنے کے لیے کام کر رہی ہیں۔

    russia ukraine latest: ۔ روسی جارحیت سے سب سے زیادہ متاثرہ یوکرائنی علاقوں میں پیدائش پر قابو پانے کی گولیوں کے تقریباً 3,000 پیکٹ بھیجے گئے ہیں۔ یوکرین کے اسپتالوں میں عصمت دری کا شکار ہونے والوں کی تعداد کے اندراج کے بعد چیریٹی تنظیمیں ہنگامی مانع حمل ادویات بھیجنے کے لیے کام کر رہی ہیں۔

    russia ukraine latest: ۔ روسی جارحیت سے سب سے زیادہ متاثرہ یوکرائنی علاقوں میں پیدائش پر قابو پانے کی گولیوں کے تقریباً 3,000 پیکٹ بھیجے گئے ہیں۔ یوکرین کے اسپتالوں میں عصمت دری کا شکار ہونے والوں کی تعداد کے اندراج کے بعد چیریٹی تنظیمیں ہنگامی مانع حمل ادویات بھیجنے کے لیے کام کر رہی ہیں۔

    • Share this:
      Russia-Ukraine War: یوکرین کے اسپتالوں میں عصمت دری کا شکار ہونے والوں کی تعداد کے اندراج کے بعد چیریٹی تنظیمیں ہنگامی مانع حمل ادویات contraception pills بھیجنے کے لیے کام کر رہی ہیں۔ روسی جارحیت سے سب سے زیادہ متاثرہ یوکرائنی علاقوں میں پیدائش پر قابو پانے کی گولیوں کے تقریباً 3,000 پیکٹ بھیجے گئے ہیں۔ بی بی سی کی ایک رپورٹ کے مطابق یہ ادویات انٹرنیشنل پلانڈ پیرنٹ ہڈ فیڈریشن (آئی پی پی ایف) (IPPF)فراہم کر رہی ہیں، جسے رضاکار تقسیم کر رہے ہیں۔

      آئی پی پی ایف (IPPF) سے وابستہ ایک رضاکار کیرولین ہیکسن کہتی ہیں کہ جب پیدائش پر قابو پانے کی گولیاں تقسیم کی جاتی ہیں تو وقت واقعی اہم ہوتا ہے۔ انہوں نے بی بی سی کو بتایا کہ آپ کے پاس پانچ دنوں کا ونڈو ہوتا ہے جس میں دوا (صبح کے بعد کی گولی) حمل کو روکنے میں موثر ہے۔ لہذا اگر آپ صنفی بنیاد پر تشدد کا شکار ہوئے ہیں تو یہ ضروری ہے کہ آپ اس دوا کو جلد از جلد لیں، کیونکہ عصمت دری کے بعد کسی کا حاملہ ہونا انتہائی تکلیف دہ ہے۔

      جنگ زدہ یوکرین میں خواتین کو مانع حمل گولیاں دی جا رہی ہیں
      انٹرنیشنل پلانڈ پیرنٹ ہڈ فیڈریشن جنگ زدہ یوکرین میں طبی اسقاط حمل کی گولیاں [اسقاط حمل کی گولیاں] بھی بھیج رہی ہے، جنہیں حمل کے 24 ہفتوں تک استعمال کیا جا سکتا ہے۔ کیرولین ہیکسن نے بی بی سی کو بتایا: "گولیوں کا مقصد بہت سے مختلف حالات میں خواتین کی مدد کرنا ہے، جن میں وہ خواتین بھی شامل ہیں جنہوں نے رضامندی سے جنسی تعلقات قائم کیے ہیں، لیکن وہ سمجھتے ہیں کہ بچہ پیدا کرنے کا یہ غلط وقت ہے۔" جنگ سے پہلے یوکرین میں ہنگامی مانع حمل ادویات حاصل کرنا ممکن تھا، لیکن سپلائی چین میں خلل پڑا ہے اور عام طور پر خواتین کے لیے اسے استعمال کرنے کے قابل ہونا واقعی اہم ہے۔

      یہ بھی پڑھیں: قبر میں مرے ہوئے شوہر کے ساتھ یوم پیدائش منانے پہنچی خاتون، دیکھا کچھ ایسا کہ اڑ گئے ہوش

      بی بی سی کے مطابق یوکرین بھر میں بہت سے لوگ بے گھر ہیں، اس لیے امدادی کارکنوں کے لیے یہ جاننا مشکل ہے کہ کن علاقوں میں کتنے سامان کی ضرورت ہے۔ گزشتہ ہفتے، یوکرین کے فوجیوں نے ماریوپول شہر کے لیے خوراک اور ادویات کی درخواست کی تھی، جسے روسی فوجیوں کی طرف سے انسانی امداد کے ذریعے روک دیا گیا ہے۔ آئی پی پی ایف یوکرین کو پیدائش پر قابو پانے والی گولیوں کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے اقوام متحدہ کے آلودگی فنڈ اور انٹرنیشنل میڈیکل کور کے ساتھ مل کر کام کر رہا ہے۔

      مزید پڑھیں: OMG! آنکھوں کا دھوکہ نہیں، شخص کے راز کھولتی ہے تصویر، پہلی نظر میں کیا آپ نے دیکھا سیکریٹ؟

      اقوام متحدہ ایسی کٹس دنیا بھر کے جنگ زدہ علاقوں میں بھیجتا ہے۔
      اقوام متحدہ کی جانب سے دنیا بھر کے جنگ زدہ علاقوں میں پھنسے خواتین اور لڑکیوں کے لیے بھیجی جانے والی 'میڈیکل کٹ' میں ہنگامی مانع حمل گولیاں شامل ہیں۔ بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق یوکرین کے دارالحکومت کیف سے چند میل کے فاصلے پر واقع دیہات میں جنگ کے دوران روسی فوجیوں کی جانب سے خواتین پر حملہ اور زیادتی کے واقعات سامنے آئے ہیں۔ بی بی سی کے مطابق، دیگر میڈیا اداروں نے کیف کے شمال مغرب میں واقع شہر بوکا سے بھی ایسے ہی واقعات کی اطلاع دی ہے۔

       
      Published by:Sana Naeem
      First published: