உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    رمضان سے پہلے Saudi Arabia میں اونٹ کی نیلامی! اتنے کروڑ میں لگی بولی، جانیے خاصیت

    سعودی عرب میں اونٹ کے لئے اب تک کی لگائی گئی سب سے مہنگی بولی۔

    سعودی عرب میں اونٹ کے لئے اب تک کی لگائی گئی سب سے مہنگی بولی۔

    اونٹ کے لئے زیادہ بولی 7 ملین سعودی ریال کی لگائی گئی جس پر اسے نیلام کردیا گیا۔ حالانکہ اونٹ کو اتنی اونچی قیمت دے کر کس شخص نے خریدا اس بات کا انکشاف نہیں کیا گیا ہے۔

    • Share this:
      ریاض: رمضان المبارک کے مقدس مہینے سے پہلے سعودی عرب میں ایک اونٹ کی اتنی بولی لگائی گئی کہ آپ انگلی دانتوں تلے دبا لیں گے۔ کہا جا رہا ہے کہ یہ سعودی عرب میں اب تک کے سب سے مہنگے اونٹوں میں سے ایک ہے۔ سعودی عرب کے اس انوکھے اونٹ کی نیلامی کے دوران 70 لاکھ سعودی ریال (14 کروڑ 23 لاکھ 45 ہزار 462) کی بولی لگائی گئی۔

      سعودی عرب کے مقامی نیوز پورٹل Al Mard نے جانکاری دی ہے کہ سعودی عرب کے سب سے مہنگے اونٹوں میں سے ایک، اس اونٹ کے لئے سرعام نیلامی کا انعقاد کیا گیا تھا۔


      نیلامی کا ایک ویڈیو بھی سامنے آیا ہے جس میں بولی لگانے والا شخص روایتی لباس میں مجمع کے درمیان مائیکروفون پکڑے ہئے نیلامی کی بولی لگارہا ہے۔ اونٹ کی شروعاتی بولی 5 ملین سعودی ریال (10 کروڑ 16 لاکھ 48 ہزار 880 روپے) لگائی گئی۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Shooting in Israel: اسرائیل کے بنی براکی شہر میں فائرنگ،پانچ کی موت، ایک شدید

      اونٹ کے لئے زیادہ بولی 7 ملین سعودی ریال کی لگائی گئی جس پر اسے نیلام کردیا گیا۔ حالانکہ اونٹ کو اتنی اونچی قیمت دے کر کس شخص نے خریدا اس بات کا انکشاف نہیں کیا گیا ہے۔

      کیا ہے سعودی عرب کے سب سے مہنگے اونٹ کی خاصیت؟
      ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ اونٹ کو دھاتی دیوار کے اندر رکھا گیا ہے اور اسے روایتی لباس پہن کر نیلامی میں شریک لوگوں کے ہجوم نے گھیر رکھا ہے۔ نیلام ہونے والا اونٹ انتہائی نایاب سمجھا جاتا ہے۔ یہ اونٹ اپنی منفرد خوبصورتی اور انفرادیت کی وجہ سے مشہور ہے۔ اس نوع کے اونٹ کم ہی نظر آتے ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں:
      جنگ کا چاہے کچھ بھی ہو انجام، ہم نہیں کریں گے ایٹمی حملہ‘ Russiaنے کردی وضاحت

      ریگستانی علاقے والے سعودی عرب اور اونٹوں کے درمیان کافی پرانہ رشتہ رہا ہے۔ اونٹ سعودی عرب کے لوگوں کی تہذیب کا حصہ ہے۔ یہ صدیوں سے سعودی کے لوگوں کی زندگی میں شامل رہے ہیں اور انہیں ’ریگستان کا جہاز‘ کہا جاتا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: