ہوم » نیوز » عالمی منظر

تارکین وطن کو پناہ دینے کی سہولت عارضی بندوبست: جرمنی

لندن۔ جرمنی اور ہنگری نے کہا ہے کہ مشرقِ وسطیٰ اور افریقہ سے آنے والے پناہ گزینوں کو پناہ دینے کے لئے کئے جانے والے انتظامات کا مقصد بحرانی صورتحال سے نمٹنا ہے اور اس رعایت کو مستقبل کے لیے مستقل بندوبست نہ سمجھا جائے۔

  • UNI
  • Last Updated: Sep 06, 2015 03:32 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
تارکین وطن کو پناہ دینے کی سہولت عارضی بندوبست: جرمنی
لندن۔ جرمنی اور ہنگری نے کہا ہے کہ مشرقِ وسطیٰ اور افریقہ سے آنے والے پناہ گزینوں کو پناہ دینے کے لئے کئے جانے والے انتظامات کا مقصد بحرانی صورتحال سے نمٹنا ہے اور اس رعایت کو مستقبل کے لیے مستقل بندوبست نہ سمجھا جائے۔

لندن۔ جرمنی اور ہنگری نے کہا ہے کہ مشرقِ وسطیٰ اور افریقہ سے آنے والے پناہ گزینوں کو پناہ دینے کے لئے کئے جانے والے انتظامات کا مقصد بحرانی صورتحال سے نمٹنا ہے اور اس رعایت کو مستقبل کے لیے مستقل بندوبست نہ سمجھا جائے۔

جرمن حکومت نے یہ بات ہفتہ کے روز ہزاروں پناہ گزینوں کی جرمنی آمد کے بعد کہی ہے ۔حکام کا کہنا ہے کہ مستقبل میں پناہ گزینوں کو یوروپ کے اسی ملک میں پناہ حاصل کرنی ہوگی جہاں وہ سب سے پہلے پہنچیں گے۔

دریں اثناء، دشوار گزار سفر طے کرنے کے بعد ہنگری اور آسٹریا کے راستے پناہ گزینوں اور تارکینِ وطن کا پہلا گروپ ہفتہ کی دیر شب کو جرمنی پہنچ گيا۔ جہاں انھیں ہنگامی رجسٹریشن مراکز میں لے جایا گیا ہے۔دوسری جانب کل دیرشب تک ہنگری سے سرحد عبور کر کے 10 ہزار پناہ گزین آسٹریا میں داخل ہو چکے ہیں ۔ آسٹریائي حکام نے کہا ہے کہ وہ اتوار کو مزید ٹرینیں چلائیں گے۔

واضح رہے کہ شام ،عراق اور یمن سمیت مغربی ایشائي ممالک میں جاری خانہ جنگی اور تشدد سے تنگ آ کر اپنا گھر و بار چھوڑنے والے ان تارکینِ وطن کا بحران سنگین صورت اختیار کرتا جارہا ہے اور یورپی یونین ان پناہ گزینوں کے بحران سے نمٹنے میں اب تک قاصر رہا ہے۔ یونین کے رکن ممالک کے حالیہ اجلاس میں اس بحران سے نمٹنے کے لئے عبوری اقدامات کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ جرمنی کا کہنا ہے کہ اس کے یہاں رواں برس آٹھ لاکھ پناہ گزینوں کی آمد متوقع ہے۔

جرمنی اور ہنگری دونوں نے یورپی یونین کے اس قانون کی پاسداری کرنے کا اعلان کیا ہے جس کے تحت پناہ گزینوں کو اسی یورپی ملک میں پناہ طلب کرنی ہوگی جہاں وہ سب سے پہلے پہنچیں گے۔

ایک ہزار پناہ گزیں جرمنی پہنچے

 

دریں اثنا، شام و عراق سمیت مغربی ایشائي ممالک کے تارکین کو پناہ دینے کے سلسلے میں دنیا بھر میں چھڑی بحث کے درمیان آسٹريا سے تقریبا ایک ہزار پناہ گزین آج صبح جرمنی پہنچے ۔
آسٹريا اور جرمنی نے مغربی ایشیائي ممالک سے آ نے والے پناہ گزینوں کے لئے اپنی سرحدیں کھول دی ہیں۔ جنگ زدہ ملک شام سے آ نے والے پناہ گزین پہلے ویانہ پہنچے اور وہاں سے انہیں ٹرین سے جرمنی کے میونخ اور دوسرے شہروں میں لایا گيا۔ کل جرمنی پہنچنے والے پناہ گزینوں کو طبی جانچ، کھانا اور کپڑے دینے کے بعد انہیں پناہ گزيں کیمپ میں لایا گیا۔ زیادہ تر پناہ گزین شام سے آرہے ہیں۔ جبکہ بہت سے تارکین وطن افغانستان اور عراق سے بھی آئے ہيں۔
جرمنی کی وزارت داخلہ کے ترجمان ہیرالڈ نیمنس نے کہا کہ جرمنی نے انسانی بنیاد پر شامی تارکین وطن کے لئے اپنی سرحدیں کھولنے کا فیصلہ کیا ہے۔دریں اثناء، ہنگری نے ہزاروں پناہ گزینوں کو آسٹریا تک پہنچانے کے لئے دیر شب کو اپنی سرحد پر 100 بسیں تعینات کی ہیں۔
First published: Sep 06, 2015 03:31 PM IST