ہوم » نیوز » عالمی منظر

پورن دیکھنے کی لت سے ختم ہوسکتی ہے آپ کی سیکس لائف: تحقیق

اگر آپ کو لگتا ہے کہ پورن دیکھنے سے آپ کو جنسی سکون ملتا ہے تو یہ غلط ہے۔ محققین نے پایا ہے کہ پورن دیکھنے کی لت سےدماغ کا ایک اہم حصہ تباہ ہوجاتا ہے۔

  • Share this:
پورن دیکھنے کی لت سے ختم ہوسکتی ہے آپ کی سیکس لائف: تحقیق
علامتی تصویر

لندن: اگر آپ کو لگتا ہے کہ پورن دیکھنے سے آپ کو جنسی سکون ملتا ہے تو یہ غلط ہے۔ محققین نے پایا ہے کہ پورن دیکھنے کی لت سے دماغ کا ایک اہم حصہ تباہ ہوجاتا ہے۔ اس کے چلتے ایک بالغ شخص نو عمر جیسی دماغی حالت میں پہنچ جاتا ہے۔ اسٹڈی میں اس بات کی تصدیق ہوئی ہے کہ جو لوگ زیادہ ایڈلٹ (فحش) کنٹینٹ دیکھتے ہیں ان کے پری فنٹل کارٹیکس کو نقصان پہنچتا ہے۔ دماغ کا یہ حصہ اندر اخلاقیات، خواہش کی قوت اور کسی  ناخوشگوار صورتحال میں آپ کا رویہ طے کرتا ہے۔

ٹائمس آف انڈیا میں چھپی ایک رپورٹ کےمطابق کناڈا کے یونیورس لاول کے محققین راہیل اینی برر کے مطابق یہ شعبہ بچوں میں ان ڈیویلپ ہوتا ہے۔ بچوں کو اپنا رویہ قابو کرنے میں پریشانی ہوتی ہے۔ تحقیق سے پتہ چلتا ہے کہ پورن دیکھنے والوں کو ان کے جذبات اور رویے کو قابو کرنے میں پریشانی ہوتی ہے جسکی وجہ سے بچے اکثر غصے میں اپنے رویے اور فیصلوں پر قابو نہیں رکھ پاتے۔

برر کے مطابق مطالعے کا نتیجہ پورن کو لیکر عام عمومی سوچ کے خلاف ہے۔ عمومی سوچ یہ ہے کہ پورن دیکھنے سے  جنسی سکون ملتا ہے جبکہ ایسا بالکل نہیں ہے۔ المیہ یہ ہے کہ پورن آپ کو اس کے ٹھیک مختلف بچکانی حرکتیں کروانے کی طرف لے جاتا ہے۔ غور طلب ہے کہ انٹرنیٹ کے بڑھتے اثر کے ساتھ لائیو۔ایکشن پورن کی مانگ مسلسل بڑھ رہی ہے۔ 2018 میں سب سے بڑی مفت پورن سائٹ پر تقریبا ساڑھے تین کروڑ ہٹس ملیں۔

اس تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ سائنس کی مدد سے پورن کی کھپت کا ہمارے اعصاب پر پڑنے والا اثر قائم ہورہا ہے۔ اس سے یہ تو واضح ہے کہ پورن  کا ان کی دماغی صحت اور سیکس لائف پر خطرناک اثر پڑ رہا ہے۔

First published: Feb 08, 2020 01:00 PM IST