ہوم » نیوز » عالمی منظر

پھر تنازعہ میں ریحانہ، بگھوان گنیش کے نیکلیس کے ساتھ ٹوئٹ کی ٹاپ لیس تصویر

بین الاقوامی پاپ اسٹار ریحانہ (Rihanna) ایک بار پھر تنازعہ میں ہیں۔ ریحانہ پر اس بار ہندو دیوی دیوتاوں کی توہین کا الزام لگا ہے۔ ریحانہ نے ٹوئٹر پر ایک تصویر ڈالی ہے، جس میں وہ ٹاپ لیس نظر آرہی ہیں۔

  • Share this:
پھر تنازعہ میں ریحانہ، بگھوان گنیش کے نیکلیس کے ساتھ ٹوئٹ کی ٹاپ لیس تصویر
پھر تنازعہ میں ریحانہ، بگھوان گنیش کے نیکلیس کے ساتھ ٹوئٹ کی ٹاپ لیس تصویر

نئی دہلی: بین الاقوامی پاپ اسٹار ریحانہ (Rihanna) ایک بار پھر تنازعہ میں ہیں۔ ریحانہ پر اس بار ہندو دیوی دیوتاوں کی توہین کا الزام لگا ہے۔ ریحانہ نے ٹوئٹر پر ایک تصویر ڈالی ہے، جس میں وہ ٹاپ لیس نظر آرہی ہیں۔ اس تصویر میں انہوں نے بھگوان گنیش کا ایک نیکلیس پہن رکھا ہے۔ اس سے پہلے زرعی قوانین کو لے کر قومی دارالحکومت دہلی کی سرحدوں پر چل رہے کسان آندولن کی حمایت میں ٹوئٹ کرکے سرخیوں میں آئی تھیں۔


ٹوئٹر پر اس تصویر کے آنے کے بعد ریحانہ پر ہندو دیوی دیوتاوں کی توہین کا الزام لگ رہا ہے۔ ریحانہ کو بینگنی ساٹن کی باٹم پہنے دیکھا جاسکتا ہے، جس کے ساتھ بینگنی رنگ کا نیکلیس ہے، جس پر بھگوان گنیش کی صورت بنی ہوئی ہے۔


پاپ اسٹار کے اس ٹوئٹ کو لے کر ہندو دیوی دیوتاوں کی توہین کا الزام لگ رہا ہے۔
پاپ اسٹار کے اس ٹوئٹ کو لے کر ہندو دیوی دیوتاوں کی توہین کا الزام لگ رہا ہے۔


مائیکرو بلاگنگ سائٹ ٹوئٹر پر یہ تصویر ٹوئٹ کرنے کے بعد کئی لوگوں نے ریحانہ کے تئیں غصہ ظاہر کیا ہے۔ ریحانہ کے کئی ہندوستانی مداح بھی ان کی اس حرکت سے ناراض ہیں۔ موصولہ اطاعات کے مطابق، ریحانہ نے یہ فوٹو شوٹ اپنی انڈرگارمینٹس کمپنی savage x fenty کے لئے کرایا تھا۔



بی جے پی لیڈر نے راہل گاندھی سے پوچھا سوال

خبر لکھے جانے تک ریحانہ کے اس ٹوئٹ پر 41,00 سے زیادہ کمنٹس اور تقریباً 27,000 ری ٹوئٹس تھے۔ وہیں اس تصویر کو 2 لاکھ سے اوپر لوگوں نے لائک کیا تھا۔ اس تصویر پر ایک صارف نے لکھا- ’ریحانہ- میرے مذہب کا استعمال ایک خوبصورتی کی شے کے طور پر نہ کریں۔ چین کے آخر میں گنیش کی مورتی ہے، جو ہمارے لئے ایک مقدس شخصیت ہے۔



بی جے پی لیڈر رام کدم نے لکھا- ’یہ دیکھنا خطرناک ہے کہ کیسے ریحانہ ہمارے پیارے بھگوان گنیش کی توہین کر رہی ہیں۔ یہ اس بات کا پردہ فاش کرتا ہے کہ ریحانہ کے دل میں ہندوستانی تہذیب، روایت اور ہمارے موضوعات کے لئے کوئی نظریہ یا اعزاز نہیں ہے۔ امید ہے، کم از کم اب راہل گاندھی اور دیگر کانگریس لیڈر ہندوستان کی شبیہ خراب کرنے میں ان کی مدد لینا بند کردیں گے۔ کیا وہ اس کی تنقید کریں گے یا اقتدار کی بھوک پیارے بھگوان گنپتی سے بڑی ہوگی۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Feb 16, 2021 08:57 PM IST