روس نے کہا۔ ہندوستان نے آئین کے دائرے میں جموں وکشمیر سے ہٹایا آرٹیکل 370

روس کی وزارت خارجہ نے کہا’’روس کو امید ہے کہ ہندوستان اور پاکستان جموں و کشمیر ریاست کی حیثیت میں تبدیلی کی وجہ سے علاقے میں صورتحال کو بگڑنے کی اجازت نہیں دیں گے۔

Aug 10, 2019 01:09 PM IST | Updated on: Aug 10, 2019 01:10 PM IST
روس نے کہا۔ ہندوستان نے آئین کے دائرے میں جموں وکشمیر سے ہٹایا آرٹیکل 370

کشمیر میں ہندوستان کے اقدامات پر روس کی حمایت

روس نے جموں و کشمیر کو خصوصی ریاست کا درجہ دینے والے آئین کے آرٹیکل 370 کو ختم کرنے کے حکومت ہند کے فیصلہ کی حمایت کرتے ہوئے اسے آئینی دائرہ کار کے اندر قرار دیا ہے۔ روس کی وزارت خارجہ نے ایک بیان جاری کرکے کہا’’روس ہندوستا ن اور پاکستان کے درمیان تعلقات کو معمول پر رکھنے کی مسلسل حمایت کرتا رہا ہے۔ ہم امید کرتے ہیں کہ دونوں ممالک کے درمیان اختلافات کو سیاسی اور سفارتی ذرائع کے ذریعہ دو طرفہ بنیاد پر 1972 کے شملہ معاہدہ اور 1999 کے لاہور اعلامیہ کی دفعات کے مطابق حل کیا جائے گا‘‘۔

وزارت نے کہا’’روس کو امید ہے کہ ہندوستان اور پاکستان جموں و کشمیر ریاست کی حیثیت میں تبدیلی کی وجہ سے علاقے میں صورتحال کو بگڑنے کی اجازت نہیں دیں گے۔ ہم اس حقیقت کو قبول کرتے ہیں کہ جموں و کشمیر ریاست کے درجے میں تبدیلی اور اس کے دو مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں تقسیم ہندوستانی جمہوریہ کے آئین کے فریم کے اندر کیا گیا ہے‘‘۔ بیان میں کہا گیا ہے’’ہمیں امید ہے کہ اس میں شامل فریق فیصلہ کے نتائج خطہ میں صورت حال کو بگڑنے کی اجازت نہیں دیں گے‘‘۔

ہندوستان کی وزارت خارجہ کے ترجمان رويش کمار نے کہا کہ جموں و کشمیر کے سلسلہ میں فیصلہ لئے جانے کے بعد ہندوستان نے کئی ممالک کو اس بارے میں سفارتی ذرائع سے پوزیشن واضح کیا ہے۔ یہاں تک کہ وزیر خارجہ کی سطح پر بھی بات کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ ان ممالک نے ہندوستان کی بات کو سمجھا ہے اور قبول کیا ہے۔ ان ممالک کے سامنے پاکستان بے نقاب ہو گیا ہے۔

رویش کمار نے جمعہ کو نئی دہلی میں کہا کہ پاکستان پریشان ہے۔ اسے محسوس ہورہا ہےکہ اب جموں و کشمیر کو لے کر اس کی سازشیں کامیاب نہیں ہوں گی اور لوگوں کو گمراہ کرنے کا اس کا ایجنڈا آگے نہیں بڑھ پائے گا۔ اسلئے وہ دنیا کے سامنے تشویشناک تصویر پیش کر کے خوف کا ماحول بنانے کی کوشش کر رہا ہے۔ وہ اس طرح کے معاملات کو ان واقعات سے جوڑ رہا ہے جن کا اس سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر کے بارے میں فیصلے آئین کے مطابق کئے گئے ہیں اور یہ ہندوستان کا اندرونی معاملہ ہے۔ اس فیصلہ کے مثبت نتائج سامنے آئیں گے۔

Loading...

Loading...