உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    روس کی پرم یونیورسٹی میں فائرنگ، 8 طلبا کی موت، کئی طلبا نے کھڑکی سے کود کر بچائی جان

    روس کی پرم یونیورسٹی میں فائرنگ، 8 طلبا کی موت، کئی طلبا نے کھڑکی سے کود کر بچائی جان

    روس کی پرم یونیورسٹی میں فائرنگ، 8 طلبا کی موت، کئی طلبا نے کھڑکی سے کود کر بچائی جان

    روس (Russia) کی پرم یونیورسٹی (Perm State University) میں پیر کے روز فائرنگ ہوئی۔ نیوز ایجنسی رائٹرس کی اطلاع کے مطابق، فائرنگ میں 8 طلبا کی موت ہوگئی۔ پرم یونیورسٹی میں طبی اہلکاروں کا کہنا ہے کہ حادثہ میں کم از کم 10 لوگ ہلاک ہوئے ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      ماسکو: روس (Russia) کی پرم یونیورسٹی (Perm State University) میں پیر کے روز فائرنگ ہوئی۔ نیوز ایجنسی رائٹرس کی اطلاع کے مطابق، فائرنگ میں 8 طلبا کی موت ہوگئی۔ پرم یونیورسٹی میں طبی اہلکاروں کا کہنا ہے کہ حادثہ میں کم از کم 10 لوگ ہلاک ہوئے ہیں۔

      شوٹر کو سیکورٹی اہلکاروں نے مار گرایا ہے۔ فائرنگ کے دوران طلبا جان بچانے کے لئے کھڑکیوں سے کود پڑے تھے۔ پرم یونیورسٹی سے آئی ایک ویڈیو نے سنسنی پھیلا دی ہے۔ حملہ آور کی شناخت تمور بیکمانسروو کے طور پر ہوئی ہے۔ شوٹنگ کے پیچھے کیا مقصد تھا، یہ ابھی واضح نہیں ہوسکا ہے۔ زخمیوں کو علاج کے لئے اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔


      پرم شہر روس کی راجدھانی ماسکو سے 700 میل مشرق میں واقع ہے۔ رپورٹ کے مطابق، اسکول کے سوشل میڈیا نے پیر کی صبح احاطے میں موجود سبھی لوگوں کو انتباہ کیا کہ اگر ممکن ہو تو کیمپس کو چھوڑ دیں یا خود کو ایک کمرے میں بند کرلیں۔ جانچ کرنے والوں نے کہا کہ گولی باری میں 8 لوگوں کی موت ہوگئی اور 6 لوگ زخمی ہوگئے ہیں۔ سوشل میڈیا پر شیئر کئے گئے ایک ویڈیو میں لوگوں کو کھڑکی سے کود کر باہر بھاگتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔

      آرٹی نیوز نے بتایا کہ روسی سیکورٹی اہلکاروں نے پیر کی صبح پرم علاقے میں پرم اسٹیٹ یونیورسٹی میں گولی باری کرنے والے ایک بندوق بردار کو مار گرایا ہے۔ روس کی TASS نیوز ایجنسی نے ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے، ’کچھ طلبا نے حملہ آور سے خود کو بچانے کے لئے یونیورسٹی کے آڈیٹوریم میں خود کو بند کرلیا۔ کچھ طلبا کھڑکیوں سے باہر کود گئے‘۔

      حملہ آور نے بے حد جدید ہتھیار سے گولیاں برسائیں۔ علاقے کی گھیرا بندی کرکے گہری تحقیقاتی مہم چلائی جا رہی ہے۔ احتیاط کے طور پر سائبیریا میں سیکورٹی کے انتظامات مزید سخت کردیا گیا ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: