உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Russia Ukraine Conflict: روس کے خلاف پابندیوں پر تبادلہ خیال کیلئے یوروپی یونین نے شروع کی میٹنگ، جانئے 10 اہم باتیں

    Russia Ukraine Conflict: روس کے خلاف پابندیوں پر تبادلہ خیال کیلئے یوروپی یونین نے شروع کی میٹنگ، جانئے 10 اہم باتیں ۔ علامتی تصویر ۔

    Russia Ukraine Conflict: روس کے خلاف پابندیوں پر تبادلہ خیال کیلئے یوروپی یونین نے شروع کی میٹنگ، جانئے 10 اہم باتیں ۔ علامتی تصویر ۔

    Russia Ukraine Conflict: روس اور یوکرین کے درمیان تنازع پر برطانیہ کے بعد یوروپی یونین ، روسی افراد اور اداروں پر پابندی عائد کرسکتا ہے ۔ اس میں سیاستدانوں سے لے کر بینکوں جیسے مالی ادارے تک شامل ہیں ۔

    • Share this:
      Russia Ukraine Conflict: روس اور یوکرین کے درمیان تنازع پر برطانیہ کے بعد یوروپی یونین ، روسی افراد اور اداروں پر پابندی عائد کرسکتا ہے ۔ اس میں سیاستدانوں سے لے کر بینکوں جیسے مالی ادارے تک شامل ہیں ۔ یہ کارروائی مشرقی یوکرین میں دو باغی علاقوں ڈونیٹسک اور لوہانسک کو روس کے ذریعہ آزاد کے طور پر تسلیم کرنے کے بعد سامنے آرہی ہے ۔ اس کو مغربی ممالک کے رد عمل کے حصے کے طور پر دیکھا گیا ہے ۔

      وہیں یوکرین میں اختلافات کو لے کر کشیدگی بڑھنے کے درمیان یوروپی یونین ، روس کے خلاف پابندیوں پر تبادلہ خیال کیلئے میٹنگ کررہا ہے ۔ برطانیہ نے پانچ بینکوں اور تین افراد پر پابندی کا اعلان کردیا ہے اور ایسی امید ہے کہ امریکہ موجودہ پابندیوں کا دائرہ بڑھائے گا ۔

      اس معاملہ کو لے کر 10 اہم باتیں جانئے

      1- نیوز ایجنسی رائٹرس نے کہا کہ یوروپی یونین کے وزرائے خارجہ کی میٹنگ آج رات ہونے والی ۔ ایسی امید ہے کہ اس سے ان 350 سے زیادہ روسی ممبران پارلیمنٹ کو پیغام دیا جاسکے گا ، جنہوں نے علاحدگی پسند علاقوں کو منظوری دینے کیلئے ووٹنگ کی تھی ۔ میٹنگ میں یوکرین میں علاحدگی پسند علاقوں میں روسی آپریشن ( فوجی یا دیگر) کو مالی مدد دینے والے تین بینکوں اور وہاں اور اس کے علاقوں کے درمیان کاروبار پر پابندی لگانے پر غور کیا جائے گا ۔

      2- یوروپی یونین کے سربراہ ارسولا وان ڈیر لیون اور چارلس مشیل نے کہا کہ اس مجوزہ پابندی کا مقصد روسی سرکار کی یوروپی یونین کی پونجی اور مالی بازاروں اور سروسز تک پہنچنے کی صلاحیت کو نشانہ بنانے کے ساتھ ساتھ اس کی بڑھتی اور جارحانہ پالیسی کی فنڈنگ کو محدود کرنا ہے ۔

      3- یوروپی یونین نے کہا کہ وہ بڑے پیمانے پر نتائج کے ساتھ پابندی لگانے کیلئے تیار ہے ۔ آئرش یوروپی یونین کے معاملات کے وزیر تھامس بارین نے کہا کہ ہمیں یہ یقینی بنانا ہوگا کہ خواہ کچھ بھی ہو ، روس کو آگے بڑھنے کیلئے کوئی حمایت نہیں ہے ۔ ہمارے قدم سے روس کو درد محسوس ہوگا ۔

      4- حالانکہ یوروپی یونین کے ذریعہ کسی بھی منظوری کو سبھی 27 اراکین کے ذریعہ منظور کیا جانا ہے اور یہ معاملات کو پیچیدہ بنا سکتا ہے ۔

      5- نیوز ایجنسی رائٹرس نے بتایا کہ بالٹک اور وسطی یوروپی ممالک پابندیوں کے حق ہیں جبکہ آسٹریلیا اور ہنگری جیسے دیگر ممالک محدود پابندیوں کو ترجیح دے رہے ہیں ۔

      6- جرمنی نے کہا ہے کہ وہ نارڈ اسٹریم 2 گیس پائپ لائن کو روک دے گا جو روس سے قدرتی گیس لاتی ہے اور اس کو روسی توانائی سپلائی پر یوروپ کے انحصار کی مثال کے طور پر دیکھا جاتا ہے ۔

      7- ناروے نے روس کے خلاف پابندیوں کی حمایت کا اعلان کیا ہے ۔ وزیر اعظم جوناس گہر اسٹور نے اوسلو میں صحافیوں سے کہا کہ یوکرین میں حالات ڈرامائی ہیں ۔ یہ کہتے ہوئے کہ روس کا الگ الگ علاقوں کو منظوری دینا ایک ٹرننگ پوائنٹ تھا ۔

      8- یونائٹیڈ کنگڈم تیزی سے آگے بڑھا ہے اور پانچ روسی بینکوں اور تین ارب پتیوں پر پابندی عائد کردی ہے ، جس کو وزیر اعظم بورس جانسن نے اقدامات کا 'پہلا بیراج' کہا ہے ۔ یہ فوری اثر سے لاگو ہوجاتے ہیں ۔

      9- پولینڈ نے روس کے صدر پوتن کے خلاف پابندیوں کو شامل کرنے کیلئے منظوری مانگی ہے ۔ وہیں امریکی سینیٹ میں ڈیموکریٹکس نے پچھلے ماہ اسی طرح کے ایک بل کو پیش کیا تھا ۔ اس میں پوتن بھی شامل تھے ، لیکن اس کو ابھی تک پاس نہیں کیا گیا ہے ۔

      10- وہیں دوسری طرف روس نے پوتن کے خلاف کسی بھی پابندی کو "politically self-destructive" قرار دیتے ہوئے خارج کردیا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: