உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Russia-Ukraine Tension:امریکہ کا بڑا دعویٰ، کہا-یوکرین میں اگلے 48 گھنٹوں میں حملہ کرسکتا ہے روس

    اگلے 48 گھنٹوں میں روس کرسکتا ہے یوکرین پر حملہ۔ (فائل فوٹو)

    اگلے 48 گھنٹوں میں روس کرسکتا ہے یوکرین پر حملہ۔ (فائل فوٹو)

    امریکی فوج کے لیفٹیننٹ جنرل ایرک کریللا نے منگل کو قانون سازوں سے اپیل کی ہے کہ اگر روس یوکرین پر حملہ کرتا ہے تو اس سے شام سمیت مشرق وسطیٰ میں بڑے پیمانے پر عدم استحکام پیدا ہونے کا خدشہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایران خطے میں امریکہ اور اتحادیوں کے لیے بدستور بڑا خطرہ ہے۔

    • Share this:
      واشنگٹن:روس یوکرین کشیدگی(Russia-Ukraine Tension) پر امریکہ نے بڑا دعویٰ کیا ہے کہ روس آئندہ 48 گھنٹوں میں یوکرین پر حملہ کر سکتا ہے۔ امریکا کے مطابق روسی فوج یوکرین پر 9 اطراف سے حملہ کر سکتی ہے۔ روسی فوج یوکرین کے دارالحکومت کیف تک پہنچ سکتی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ امریکہ اب یوکرین کو ہتھیار فراہم کر کے مدد کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔ بدھ کو دو امریکی فوجی طیارے ہتھیاروں کے ساتھ یوکرین کے دارالحکومت کیف پہنچے۔ امریکی طیاروں نے یوکرین کو 80 ٹن سے زیادہ وزنی ہتھیار فراہم کیے ہیں۔ ریاستہائے متحدہ کے فوجی طیارے اب تک ایسے 10 طیاروں کے ہتھیاروں کے ساتھ یوکرین سے رابطہ کر چکے ہیں۔

      یوکرین کے وزیر دفاع اولیکسی ریزنکوف(Ukrainian Defence Minister Oleksii Reznikov) نے یہ اطلاع دی۔ انہوں نے ٹویٹ کیا کہ آج دو امریکی طیارے 80 ٹن سے زیادہ بارود کے ساتھ بوریسپل ہوائی اڈے(Boryspil Airport) پر اترے۔ یوکرائنی فوج کے ذرائع کے حوالے سے آر بی ایس یوکرین نے کہا کہ امریکہ یوکرین کو کل 45 طیارے ہتھیار فراہم کرنے کا منصوبہ بنایا ہے۔

      قابل ذکر بات یہ ہے کہ حالیہ ہفتوں میں یوکرین کے ارد گرد کی صورتحال مزید خراب ہوئی ہے۔ امریکہ اور یورپی یونین نے یوکرین کی سرحد پر روسی فوج کی موجودگی پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ یہی نہیں، نیٹو نے اتحادیوں سے بھی اپیل کی ہے کہ وہ کیف کے لیے اپنی فوجی مدد میں اضافہ کریں۔

      روس کے حملے سے کئی ملکوں میں ہوگا عدم استحکام
      امریکی فوج کے لیفٹیننٹ جنرل ایرک کریللا نے منگل کو قانون سازوں سے اپیل کی ہے کہ اگر روس یوکرین پر حملہ کرتا ہے تو اس سے شام سمیت مشرق وسطیٰ میں بڑے پیمانے پر عدم استحکام پیدا ہونے کا خدشہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایران خطے میں امریکہ اور اتحادیوں کے لیے بدستور بڑا خطرہ ہے۔ ’چین سینٹرل کمانڈ کے علاقے میں اپنی طاقت بڑھا رہا ہے اور وہاں اخراجات کو بڑھا رہا ہے،‘ کوریللا نے مشرق وسطیٰ میں اعلیٰ امریکی کمانڈر کے عہدے کے لیے سینیٹ کی سماعت کے دوران ہاؤس آرمڈ سروسز کمیٹی کو یہ جانکاری دی۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: