உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Ukraine Russia War:روس-یوکرین جنگ میں 5ویں صحافی کی موت، کئی دنوں سے لاپتہ میکس لیوین کیو کے پاس مردہ پائے گئےا

    یوکرین میں ایک اور صحافی کی ہوئی موت۔

    یوکرین میں ایک اور صحافی کی ہوئی موت۔

    یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی نے ہفتے کی صبح اپنے ہم وطنوں کو خبردار کیا کہ دارالحکومت سے پیچھے ہٹنے والے روسی فوجیوں نے ان کے مضافات میں ایک بڑی تباہی پیدا کر دی ہے، کیونکہ انہوں نے پورے علاقے میں، یہاں تک کہ گھروں اور لاشوں کے ارد گرد بارودی سرنگیں چھوڑی ہیں۔

    • Share this:
      کیو: یوکرین کے فوٹوگرافر اور دستاویزی فلم بنانے والے میکس لیون دارالحکومت کیف کے قریب مردہ پائے گئے۔ لیون 13 مارچ کو اس وقت لاپتہ ہو گئے جب وہ کیو اوبلاسٹ کے ویشگوروڈ ضلع میں جنگ کی ڈاکیومنٹری کرنے گئے تھے۔ لیون نے رائٹرز، بی بی سی اور اے پی سمیت کئی یوکرین اور بین الاقوامی میڈیا کے ساتھ کام کیا ہے۔ لیون کی عمر 40 سال تھی۔ ان کے پسماندگان میں بیوی اور چار بچے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق لیون 5ویں صحافی ہیں جو جنگ میں مارے گئے ہیں۔

      اسی وقت یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی نے ہفتے کی صبح اپنے ہم وطنوں کو خبردار کیا کہ دارالحکومت سے پیچھے ہٹنے والے روسی فوجیوں نے ان کے مضافات میں ایک بڑی تباہی پیدا کر دی ہے، کیونکہ انہوں نے پورے علاقے میں، یہاں تک کہ گھروں اور لاشوں کے ارد گرد بارودی سرنگیں چھوڑی ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Ukraine-Russia War: روس کی سرحد میں پہلی مرتبہ داخل ہوا یوکرین، تیل ڈپو پر کیا فضائی حملہ

      ماریوپول میں گہرایا انسانی بحران
      زیلنسکی نے یہ وارننگ ایسے وقت جاری کی ہے، جب روسی فوج کی جانب سے محفوظ باہر نکلنے کے کاموں کو لگاتار دوسرے دن رکاوٹ ڈالنے سے بندرگاہی شہر ماریوپول میں انسانی بحران گہرا گیا ہے اور کریمن نے یوکرین پر روسی زمین پر واقع ایک ایندھن ڈپو پر ہیلی کاپٹر سے حملہ کرنے کا الزام لگایا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      سری لنکا میں بڑھ گیا بحران- ایک کپ چائے 100 روپے اور بریڈ کا پیکیٹ 150 روپے میں مل رہا

      روسی تیل کے ڈپو پر یوکرین کے حملے
      آپ کو بتادیں کہ جمعہ کی صبح یوکرین سے ملحقہ روس کے بیلگوروڈ میں ایک آئل ڈپو میں بھیانک آگ یوکرین کے حملے کی وجہ سے لگی تھی۔ اس کا انکشاف خود بیلگوروڈ کے گورنر نے کیا۔ اسی وقت، یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی نے روسی تیل کے ڈپو پر حملے کا حکم دینے کے سوال پر تبصرہ کرنے سے انکار کر دیا۔ فاکس نیوز کو انٹرویو دیتے ہوئے زیلنسکی نے کہا کہ وہ سپریم کمانڈ کے طور پر جو احکامات دیتے ہیں ان پر وہ کسی سے بھی بات نہیں کرتے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: