உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    روس-یوکرین جنگ: اسکول کی عمارت پر گرا بم، حملے میں 60 افراد کے ہلاک ہونے کا خدشہ

    روس-یوکرین جنگ کی فائل فوٹو

    روس-یوکرین جنگ کی فائل فوٹو

    Russia-Ukraine War: مشرقی یوکرین کے لہانسک علاقے میں واقع گاوں کے اسکول میں بم (Russian Army Bombing) گرنے کے بعد ہوئے خطرناک دھماکہ میں تقریباً 60 افراد کے مارے جانے کا خدشہ ہے۔ اتوار کو ریاست کے گورنر نے اس کی جانکاری دی۔ روسی آرمی نے ہفتہ کے روز دوپہر بلوہوریوکا میں ایک اسکول کو نشانہ بناتے ہوئے اس پر بم گرا دیا۔ جہاں تقریباً 90 افراد نے پناہ لے رکھی تھی۔ دھماکے کے بعد اسکول کی عمارت میں آگ لگ گئی۔

    • Share this:
      کیو: یوکرین جنگ میں روس کے حملے مسلسل جاری ہیں۔ مشرقی یوکرین کے لہانسک علاقے میں واقع گاوں کے اسکول میں بم گرنے کے بعد ہوئے خوفناک دھماکے میں تقریباً 60 افراد کی ہلاکت کا خدشہ ہے۔ اتوار کو ریاست کے گورنر نے اس کی اطلاع دی۔ سیرہیئے گوڈائی نے بتایا کہ روس کی فوج نے اس خطرناک حملے کو ہفتہ کے روز انجام دیا۔

      نیوز ایجنسی رائٹرس کے مطابق، لہانسک کے گورنر کے مطابق، روسی آرمی نے ہفتہ کے روز دوپہر بلوہوریکا میں ایک اسکول کو نشانہ بناتے ہوئے اس پر بم گرا دیا، جہاں تقریباً 90 افراد نے پناہ لے رکھی تھی۔ دھماکے کے بعد اسکول کی عمارت میں آگ لگ گئی۔

      سوشل میڈیا ایپ پر اس حادثہ کی جانکاری دیتے ہوئے گورنر نے کہا کہ تقریباً 4 گھنٹے کی سخت مشقت کے بعد آگ کو بجھایا گیا۔ ملبہ ہٹانے پر بدقسمتی سے صرف دو افراد کی لاش ملی۔ 30 لوگوں کو عمارت سے محفوظ طریقے سے باہر نکالا گیا۔ ان میں سے 7 افراد زخمی ہوگئے تھے۔ جبکہ باقی بچے 60 افراد کا پتہ نہیں چلا، ان کے حملے میں مارے جانے کا خدشہ ہے۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      سری لنکا: اپوزیشن لیڈر ساجتھ پریم داسا نے عہدہ ٹھکرایا، مہندر راج پکشے دے سکتے ہیں استعفیٰ

      حالانکہ نیوز ایجنسی رائٹرس نے اس رپورٹ کی تصدیق نہیں کی ہے۔ دونوں ممالک کے درمیان جاری جنگ میں یوکرین مسلسل روس پر بے قصور شہریوں کو نشانہ بنانے کا الزام لگاتا رہا ہے۔ اس سے پہلے ماریوپول شہر میں واقع اسٹیل پلانٹ پر بھی روس کی فوج خطرناک ہوائی حملے اور گولی باری کی تھی، جہاں یوکرینی شہریوں کے ساتھ ساتھ فوج کے جوان بھی موجود تھے۔ حالانکہ ہفتہ کے روز سبھی خواتین، بچوں اور بزرگوں کو ازووسٹل پلانٹ سے نکال لیا گیا۔

      اس سے پہلے روسی فوج نے گزشتہ ماہ ماریو پول تھیئیٹر پر میزائل سے حملہ کیا تھا۔ اس خطرناک حملے میں 600 سے زیادہ لوگوں کے مارے جانے کی بات سامنے آئی تھی۔ یوکرینی صدر ولو دیمیر زیلنسکی نے کہا ہے کہ روس یوکرین میں جنگ ختم نہیں کرنا چاہتا ہے۔ کیونکہ وہ دیگر یوروپین ممالک پر قبضہ کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: