உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Russia-Ukraine War: پوتن کو روکنے کے لئے برطانیہ نے بنایا خاص منصوبہ، کہا-روس کو کبھی نہیں ہونے دیں گے کامیاب

    برطانوی وزیراعظم بوریس جانسن نے پوتن کو لے کر کہی یہ بڑی بات۔

    برطانوی وزیراعظم بوریس جانسن نے پوتن کو لے کر کہی یہ بڑی بات۔

    وزیر اعظم بورس جانسن نے کہا کہ پوتن کو ناکام ہونا چاہیے اور انہیں اس جارحانہ اقدام میں ناکام ہونا ہی چاہیے۔ یہ اصولوں پر مبنی بین الاقوامی آرڈر کے لیے حمایت کا اظہار کرنے کے لیے کافی نہیں ہے۔

    • Share this:
      لندن: برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن نے روس یوکرین کے بحران کے حل کے لیے چھ نکاتی منصوبہ پیش کیا اور تنازع کے خاتمے کے لیے بین الاقوامی سطح پر کوششیں تیز کرنے پر زور دیا۔ اگلے ہفتے لندن میں 10 ڈاؤننگ aسٹریٹ میں عالمی رہنماؤں کی میزبانی سے پہلے نیویارک ٹائمز میں اپنے مضمون میں، جانسن نے اس بات کا اعادہ کیا کہ روسی صدر ولادیمیر پوتن کو ’فوجی طاقت‘کے بل بوتے بین الاقوامی قوانین کو پھر سے لکھنے میں کسی بھی قیمت پر کامیاب نہیں ہونے دینا چاہیے۔

      وزیر اعظم بورس جانسن نے کہا کہ پوتن کو ناکام ہونا چاہیے اور انہیں اس جارحانہ اقدام میں ناکام ہونا ہی چاہیے۔ یہ اصولوں پر مبنی بین الاقوامی آرڈر کے لیے حمایت کا اظہار کرنے کے لیے کافی نہیں ہے۔ ہمیں فوجی طاقت کے ذریعے قوانین کو دوبارہ لکھنے کی کوشش کا دفاع کرنا چاہیے۔ انہوں نے لکھا کہ دنیا دیکھ رہی ہے۔ یہاں یوکرین کے لوگ ہمارے جج بنیں گے، مستقبل کے مورخ نہیں۔

      یہ بھی پڑھیں
      Russia Ukraine War:یوکرین کے صدر کے گھر کے باہر گرا راکٹ، زیلنسکی نے کہا- خطا ہوگیا نشانہ

      وزیراعظم بوریس جانسن کی منصوبہ بندی میں شامل 6 نکاتی پروگرام
      1
      عالمی رہنماؤں کو یوکرین کے لیے ’بین الاقوامی انسانی اتحاد‘ تشکیل دینا چاہیے۔
      2
      یوکرین کی ’سیلف ڈیفنس کی کوششوں‘ کی بھی حمایت کی جانی چاہیے۔
      3
      روس پر معاشی دباؤ مزید بڑھانا چاہیے۔
      4
      بین الاقوامی برادری کو یوکرین کے خلاف روس کے اقدامات کو ’بتدریج معمول پر لانے‘کی مخالفت کرنی چاہیے۔

      یہ بھی پڑھیں
      روس - یوکرین جنگ: 14 لاکھ سے زیادہ نے چھوڑا ملک، مغربی ممالک کو پتن کی وارننگ
      5
      جنگ کا سفارتی حل تلاش کیا جانا چاہیے لیکن یوکرین کی جائز حکومت کی مکمل شراکت کے ساتھ۔
      6
      نارتھ اٹلانٹک ٹریٹی آرگنائزیشن (نیٹو) ممالک کے درمیان’سیکیورٹی اور لچک کو مضبوط بنانے کے لیے فوری مہم‘ ہونی چاہیے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: