உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Russia Ukraine War: زاپوریزیا کے لئے آگے بڑھا آئی اے ای اے کارواں، یوکرین کے 48 ٹینک تباہ

    یوکرین کے شہر زاپوریزہیا میں زاپوریزہیا نیوکلیئر پاور پلانٹ کا معائنہ کرے گی آئی اے ای اے کی ٹیم۔ (فائل تصویر: رائٹرز)

    یوکرین کے شہر زاپوریزہیا میں زاپوریزہیا نیوکلیئر پاور پلانٹ کا معائنہ کرے گی آئی اے ای اے کی ٹیم۔ (فائل تصویر: رائٹرز)

    Russia Ukraine War: آئی اے ای اے کے سربراہ رافیل گروسی نے روانگی سے قبل کیف میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ چھ ماہ کی مسلسل کوششوں کے بعد بالآخر ہم زاپوریزیا کے لیے روانہ ہو رہے ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • New Delhi | Jammu | Hyderabad
    • Share this:
      Russia Ukraine War: انٹرنیشنل اٹامک انرجی ایجنسی یعنی IAEA کا ایک قافلہ زاپوریزیا کے لیے روانہ ہو گیا ہے۔ روس کے زیر کنٹرول علاقے میں رات گزارنے کے بعد آئی اے ای اے کی ٹیم تابکاری کے خطرے کا جائزہ لینے کے لیے آج جمعرات کی صبح یورپ کے سب سے بڑے جوہری پاور پلانٹ کا دورہ کررہی ہے۔

      ماہرین کی ٹیم کے زاپوریزیا روانہ ہونے کے بعد روس اور یوکرین کے درمیان کشیدگی مزید بڑھ گئی ہے۔ روسی عہدیداروں کا کہنا ہے کہ جائزہ لینے کا کام ایک ہی دن م یں ختم ہوجانے کا امکان ہے، جب کہ آئی اے ای اے اور یوکرین کے عہدیداروں نے اس میں زیادہ وقت لگنے کی بات کہی ہے۔

      دوسری جانب یوکرین کے مشرقی اور جنوبی محاذوں پر شدید لڑائی جاری ہے۔ یوکرین کی فوجیں ان علاقوں کو دوبارہ حاصل کرنے کے لیے لڑ رہی ہیں جن پر روس نے حال ہی میں قبضہ کیا تھا۔ اس دوران روس نے میکولائیف کے قریب جمع یوکرینی فوجیوں پر بڑا حملہ کرنے کی خبر ہے۔

      روس کا دعویٰ ہے کہ اس حملے میں 1200 سے زیادہ یوکرینی فوجی مارے گئے ہیں۔ حالانکہ، اس کی ابھی تصدیق نہیں ہوئی ہے۔ دوسری جانب، روس نے یہ دعویٰ بھی کیا ہے کہ اس کی فوج نے یوکرین کے 48 تینک اور 37 بکتر بند جنگی گاڑیاں تباہ کردئیے ہیں۔ ساتھ ہی، بڑی تعداد میں ہتھیار اور فوجی آلات بھی تباہ کردئیے گئے ہیں۔

      چھ مہینے مسلسل کوششوں کا نتیجہ
      آئی اے ای اے کے سربراہ رافیل گروسی نے روانگی سے قبل کیف میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ چھ ماہ کی مسلسل کوششوں کے بعد بالآخر ہم زاپوریزیا کے لیے روانہ ہو رہے ہیں۔ پلانٹ کے معائنے میں چند روز لگنے کا امکان ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      UN ‏میں ہندوستان کو ملےگا فرانس کا ساتھ، پیرس میں دونوں ممالک کے درمیان اہم بات چیت۔۔۔

      یہ بھی پڑھیں:
      China-Taiwan:چین کے کے ڈرون پر پہلی بار تائیوان نے کی فائرنگ، کہا-’یہ صرف ایک وارننگ ہے‘

      انہوں نے کہا کہ ’ہمارے پاس وہاں کی اصل صورتحال کا پتہ لگانے اور انہیں مستحکم رکھنے کا ایک اہم کام ہے۔ ہم جنگ کے میدان میں جا رہے ہیں۔ اس کے لیے ہمیں نہ صرف روس، بلکہ یوکرین سے بھی گیارنٹی چاہیے۔‘ مارچ میں ہی روس نے اس پلانٹ پر قبضہ کر لیا تھا۔ اسے اب بھی یوکرین کے انجینئرز چلا رہے ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: