உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Russia-ukraine War: میرا قتل کرانے چاہتے ہیں پوتن، یوکرین کے صدر زیلنیسکی کا الزام، کیف میں ایئر الرٹ

    Russia-ukraine War: یوکرین کی حکومت کو سنیچر کی صبح ان کے مشن کے بارے میں معلومات ملی۔ اس کے بعد یوکرین کی حکومت نے صدر کی سکیورٹی بڑھا دی گئی ہے۔ اس مشن کی اطلاع ملنے پر یوکرین کی حکومت نے دارالحکومت میں 36 گھنٹے کا سخت کرفیو نافذ کر دیا۔

    Russia-ukraine War: یوکرین کی حکومت کو سنیچر کی صبح ان کے مشن کے بارے میں معلومات ملی۔ اس کے بعد یوکرین کی حکومت نے صدر کی سکیورٹی بڑھا دی گئی ہے۔ اس مشن کی اطلاع ملنے پر یوکرین کی حکومت نے دارالحکومت میں 36 گھنٹے کا سخت کرفیو نافذ کر دیا۔

    Russia-ukraine War: یوکرین کی حکومت کو سنیچر کی صبح ان کے مشن کے بارے میں معلومات ملی۔ اس کے بعد یوکرین کی حکومت نے صدر کی سکیورٹی بڑھا دی گئی ہے۔ اس مشن کی اطلاع ملنے پر یوکرین کی حکومت نے دارالحکومت میں 36 گھنٹے کا سخت کرفیو نافذ کر دیا۔

    • Share this:
      Russia-Ukraine War News: یوکرین پر روس کا حملہ (Russia-Ukraine War)  پیر کو پانچویں دن بھی جاری ہے۔ اس درمیان یوکرین کے صدر وولادومیر زیلنسکی  (Ukrainian president Volodymyr Zelensky)  نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ روس کے صدر  (Vladimir Putin) مجھے قتل کرنا چاہتے ہیں۔ اس کے لیے کریملن (روسی صدر کا دفتر) نے 400 مسلح جنگجوؤں کو کیف بھیجا ہے۔ یہ کرائے کے فوجی کریملن کے حکم پر کیف میں داخل ہوئے ہیں اور کسی بھی قیمت پر مجھے قتل کرنا چاہتے ہیں، تاکہ کیف میں روسی حمایت یافتہ حکومت قائم کی جا سکے۔ 'دی ٹائمز' میگزین نے اپنے تازہ ایڈیشن میں صدر کے حوالے سے ایک رپورٹ شائع کی ہے۔

      خبروں کے مطابق واگنر گروپ مبینہ طور پر ایک نجی ملیشیا ہے جسے صدر پوتن کے قریبی اتحادیوں میں سے ایک چلاتا ہے۔ پانچ ہفتے قبل افریقہ سے یہ کرائے کے فوجی پیسے کے لالچ میں زیلنسکی کی حکومت کو تباہ کرنے کے مشن پر روانہ ہوئے تھے۔

      یوکرین کی حکومت کو سنیچر کی صبح ان کے مشن کے بارے میں معلومات ملی۔ اس کے بعد یوکرین کی حکومت نے صدر کی سکیورٹی بڑھا دی گئی ہے۔ اس مشن کی اطلاع ملنے پر یوکرین کی حکومت نے دارالحکومت میں 36 گھنٹے کا سخت کرفیو نافذ کر دیا اور شہریوں سے کہا گیا ہے کہ اگر اس دوران کوئی باہر نظر آیا  تو گولی ماری جا سکتی ہے۔

      روس پر دباؤ ڈالنے کی کوششیں جاری ہیں۔
      دوسری جانب اس جنگ  کو روکنے اور روس پر دباؤ ڈالنے کی کوششیں بھی جاری ہیں۔ اس معاملے کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی (UNGA) کے خصوصی ہنگامی اجلاس میں بھیجنے کے لیے پیر کو اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل (UNSC) میں ووٹنگ ہوئی۔ تجویز کے حق میں 11 اور مخالفت میں 1 ووٹ پڑا۔ ہندستان، چین اور یو اے ای نے دوبارہ ووٹنگ سے دوری بنا رکھی ۔ اسی دوران آج اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نے یوکرین کے معاملے پر ہنگامی اجلاس طلب کیا ہے۔

      امریکہ یوکرین کو اسٹنگر میزائل فراہم کرے گا۔
      دریں اثنا، امریکہ نے جمعہ کو پہلی بار یوکرین کو اسٹنگر میزائلوں کی براہ راست فراہمی کی منظوری دی۔ ابھی تک یہ طے نہیں ہوا کہ امریکا یوکرین کو اسٹنگر میزائل کب دے گا۔ لیکن امریکی حکام کا کہنا ہے کہ یو ایس۔ فی الحال شپمنٹ کی لاجسٹکس پر کام کر رہے ہیں۔ امریکہ نے یہ فیصلہ جرمنی کے اس اعلان کے بعد کیا، جس میں یوکرین کو 500 اسٹنگر میزائل اور دیگر ہتھیار دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: