உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Russia Ukraine War: ٹی وی نیوز شو میں جنگ کے خلاف آواز اٹھانے والی روسی صحافی لاپتہ

    Russia Ukraine War: ٹی وی نیوز شو میں جنگ کے خلاف آواز اٹھانے والی روسی صحافی لاپتہ (twitter/@Kira_Yarmysh)

    Russia Ukraine War: ٹی وی نیوز شو میں جنگ کے خلاف آواز اٹھانے والی روسی صحافی لاپتہ (twitter/@Kira_Yarmysh)

    Russia Ukraine War: روس کے سرکاری چینل ون (Channel One) کی ملازم ماریا اویسیانکووا (Maria Ovsyannikova) کو ایک نیوز شو کے دوران جنگ مخالف پلے کارڈ دکھانا مہنگا پڑ گیا ہے ۔ روس کی پولیس نے ان کو تقریبا 12 گھنٹے حراست میں رکھا تھا اور اس کے بعد سے وہ لاپتہ بتائی جارہی ہیں ۔

    • Share this:
      ماسکو: روس کے سرکاری چینل ون (Channel One) کی ملازم ماریا اویسیانکووا (Maria Ovsyannikova) کو ایک نیوز شو کے دوران جنگ مخالف پلے کارڈ دکھانا مہنگا پڑ گیا ہے ۔ روس کی پولیس نے ان کو تقریبا 12 گھنٹے حراست میں رکھا تھا اور اس کے بعد سے وہ لاپتہ بتائی جارہی ہیں ۔ ماریا نے نیوز شو کے دوران جنگ مخالف پلے کارڈ کو دکھانے سے ٹھیک پہلے ایک ویڈیو پیغام میں روس کی سرکار کو یہ کہتے ہوئے پھٹکار لگائی تھی کہ چینل ون میں کریمنل کا پروپیگنڈہ پھیلانے کا کام کرنے کیلئے وہ شرمندہ ہیں ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : جنگ کے دورن یوکرین میں تین دن میں دوسرے صحافی کی موت، فاکس نیوز کیلئے کرتا تھا کام


      چینل ون میں ایک ایڈیٹر ماریا نے پیر کو اپنے چینل پر چل رہے ایک نیوز شو میں رکاوٹ ڈالی تھی ۔ ماریا نے اس شو میں ایک پلے کارڈ دکھایا ، جس پر لکھا تھا : اسٹاپ دی وار ، کسی بھی طرح کے پروپیگنڈہ پر بھروسہ نہ کریں ، وہ آپ سے جھوٹ بول رہے ہیں ، روسی جنگ کے خلاف ہیں ۔ اس کے بعد انہیں پولیس اسٹیشن لے جانے سے پہلے تھوڑی دیرتک دفتر میں ہی یرغمال بناکر رکھا گیا ۔

      اب حقوق انسانی کے گروپ او وی ڈی نے جانکاری دیتے ہوئے بتایا ہے کہ 12 گھنٹے کی حراست میں رکھے جانے کے بعد سے ماریا کا کچھ بھی اتہ پتہ نہیں ہے ۔ ماریا کے وکیل کا ماننا ہے کہ انہیں کسی خفیہ جگہ پر قید کرکے رکھا گیا ہے ۔ وہیں ایک یوکرینی سفیر کا کہنا ہے کہ اب وہ کسی بھی پولیس اسٹیشن میں نہیں ملیں گی ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : روس کے صدر پوتن کو 'سائیکوپیتھ' کہنے والی ماڈل کا قتل، سوٹ کیس میں ملی لاش!


      وہیں دوسری طرف یوکرین کے صدر زیلینسکی نے اپنے ایک ویڈیو پیغام میں ماریا کا ان کے اس بہادری والے کام کیلئے شکریہ ادا کیا ۔ زیلینسکی نے کہا کہ میں ان روسی شہریوں کا شکریہ ادا کرتا ہوں جو سچائی کو سامنے لانے کی کوشش کرنا بند نہیں کررہے ہیں ۔ وہ لوگ جو پروپیگنڈہ سے لڑتے ہیں اور سچائی بتاتے ہیں ، اپنے دوستوں اور اہل خانہ کو حقیقت بتاتے ہیں اور ذاتی طور سے میں اس خاتون کا شکرگزار ہوں ، جس نے جنگ کے خلاف ایک پوسٹر کے ساتھ چینل ون کے اسٹوڈیو میں انٹری کی ۔

      وہیں دوسری طرف ہزاروں لوگوں نے ماریا کے جرات مندانہ کام کی سراہنا کی ہے اور کئی لوگوں نے ٹویٹر پر ان کے ویڈیوز کو شیئر کیا ہے ۔ روس میں جیل میں بند اپوزیشن لیڈر ایلکسی نولنی کی ترجمان کیارا یارمشا نے اس ویڈیو کو شیئر کیا ہے ، جس کو 82 لاکھ سے زیادہ مرتبہ دیکھا جاچکا ہے ۔

      غور طلب ہے کہ روس میں اب تک عوامی مقامات پر جنگ مخالف مظاہروں کیلئے 14000 سے زیادہ لوگوں کو گرفتار کیا جاچکا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: