உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Russia-Ukraine War: یوکرین سے جان بچاکر 1100 کلومیٹر دور سلوواکیہ بارڈر تنہا پہنچا 11 سال کا بچہ، ہاتھ پر لکھے نمبر نے رشتہ داروں سے ملوایا

    Russia-Ukraine War: یہ بچہ نیوکلیئر پلانٹ والے یوکرین کے جپوریجھیا علاقہ کا ہے ۔ بچے کو جنگ کے حالات سے بچانے کیلئے اس کی ماں نے 1100 کلو میٹر دور سلوواکیہ بھیجا تھا ۔ بچے کی ماں اپنی بوڑھی ماں کے ساتھ رہتی ہے ، اس وجہ سے بچے کے ساتھ نہیں جاسکی ۔

    Russia-Ukraine War: یہ بچہ نیوکلیئر پلانٹ والے یوکرین کے جپوریجھیا علاقہ کا ہے ۔ بچے کو جنگ کے حالات سے بچانے کیلئے اس کی ماں نے 1100 کلو میٹر دور سلوواکیہ بھیجا تھا ۔ بچے کی ماں اپنی بوڑھی ماں کے ساتھ رہتی ہے ، اس وجہ سے بچے کے ساتھ نہیں جاسکی ۔

    Russia-Ukraine War: یہ بچہ نیوکلیئر پلانٹ والے یوکرین کے جپوریجھیا علاقہ کا ہے ۔ بچے کو جنگ کے حالات سے بچانے کیلئے اس کی ماں نے 1100 کلو میٹر دور سلوواکیہ بھیجا تھا ۔ بچے کی ماں اپنی بوڑھی ماں کے ساتھ رہتی ہے ، اس وجہ سے بچے کے ساتھ نہیں جاسکی ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : یوکرین پر روس کے حملے کے درمیان 11 سال کے ایک معصوم کی کہانی سامنے آئی ہے جو جنگ کے حالات میں 1100 کلو میٹر کا سفر طے کرکے سلوواکیہ بارڈر تک پہنچا ۔ اتنے طویل ٹرین کے سفر میں بچہ اکیلا تھا ۔ اس یوکرینی بچے کے پاس سفر کے دوران ایک پلاسٹک بیگ ، پاسپورٹ اور ہاتھ پر لکھا سلوواکیہ کا ایک موبائل نمبر ہی تھا ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : چین کی میڈیا کا دعوی، روس نے بنائی اپنے 31 دشمن ممالک کی فہرست، جانئے کون کون ہے شامل


      یہ بچہ نیوکلیئر پلانٹ والے یوکرین کے جپوریجھیا علاقہ کا ہے ۔ بچے کو جنگ کے حالات سے بچانے کیلئے اس کی ماں نے 1100 کلو میٹر دور سلوواکیہ بھیجا تھا ۔ بچے کی ماں اپنی بوڑھی ماں کے ساتھ رہتی ہے ، اس وجہ سے بچے کے ساتھ نہیں جاسکی ۔

       

      یہ بھی پڑھئے : یوکرین میں رونے لگا روسی فوج کا جوان، لوگوں نے دیا کھانا اور ماں سے کروائی بات، ویڈیو وائرل


      بتادیں کہ جپوریجھیا علاقہ میں یوروپ کا سب سے بڑا نیوکلیئر پاور پلانٹ ہے ۔ اس پلانٹ سے ریڈیئیشن کے خطرہ کو دیکھتے ہوئے یہاں سے کافی تعداد میں لوگ نقل مکانی کررہے ہیں ۔

      سفر کے دوران ملے لوگوں نے بچے کا خیال رکھا اور اس کو کھانے کو دیا ۔ سلوواکیہ بارڈر پر جب یہ بچہ پہنچا تو گارڈ حیران رہ گئے ۔ بچے کے ہاتھ پر لکھے موبائل نمبر پر فون کرکے گارڈس نے سلوواکیہ کی راجدھانی براتسلاوا میں رہنے والے اس کے رشتہ داروں کو بلایا اور اس کو سونپ دیا ۔

      جانکاری کے مطابق بچے کی ماں نے سلوواکیہ سرکار کا شکریہ ادا کرنے کیلئے ایک میسیج بھیجا ہے ۔ سلوواکیہ کی انٹیریئر منسٹری نے اس بچے کی تصویر فیس بک پر پوسٹ کی ہے اور بچے کو بے خوف اور جنون سے بھرا بتایا ہے ۔ پوسٹ میں بچے کو سچا ہیرو بتایا گیا ہے ۔ ساتھ ہی یہ بھی کہا گیا ہے کہ اتنی بڑا سفر کرنے کے دوران اس نے اپنی ننہی مسکراہٹ ، بے خوفی اور جذبے سے افسران کا دل جیت لیا ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: