உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جنگ کا چاہے کچھ بھی ہو انجام، ہم نہیں کریں گے ایٹمی حملہ‘ Russiaنے کیا واضح، بتایا جنگ میں یوکرین کو کتنا پہنچا نقصان

    یوکرین پر روس کے حملے کا آج ہے 35واں دن۔

    یوکرین پر روس کے حملے کا آج ہے 35واں دن۔

    کریملن کے ترجمان دمتری پیسکوف نے یوکرین پر ایٹمی حملے کے حوالے سے سسپنس سے پردہ اٹھایا ہے۔ روس نے کہا ہے کہ وہ یوکرین پر جوہری ہتھیار استعمال نہیں کرے گا۔

    • Share this:
      ماسکو: روس نے ایک بار پھر سخت رویہ اپنانا شروع کر دیا ہے۔ روس نے خبردار کیا ہے کہ اگر نیٹو ممالک نے یوکرین کو طیارے اور فضائی دفاعی نظام فراہم کیا تو روس اس کے مطابق جواب دے گا۔ روس کے وزیر دفاع سرگئی شوئیگو نے کہا ہے کہ روس کا بنیادی مقصد ڈونباس کی آزادی ہے۔ میڈیا کو انٹرویو دیتے ہوئے کریملن کے ترجمان دمتری پیسکوف نے یوکرین پر ایٹمی حملے کے حوالے سے سسپنس سے پردہ اٹھایا ہے۔ روس نے کہا ہے کہ وہ یوکرین پر جوہری ہتھیار استعمال نہیں کرے گا۔ روس-یوکرین جنگ کا نتیجہ کچھ بھی ہو، یوکرین کی سرزمین پر کوئی ایٹمی حملہ نہیں ہوگا۔ روس ان ہتھیاروں کا استعمال اسی وقت کرے گا جب روس کے وجود کو خطرہ ہو گا۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Bahrain میں برقعہ پہنی خاتون کو نہیں دی گئی انٹری،عہدیداروں نے ہندوستانی ریسٹورنٹ کردیابند

      خیال کیا جاتا ہے کہ یہ پوتن کی نیٹو ممالک اور امریکہ کو براہ راست وارننگ ہے۔ مغربی ممالک مسلسل یہ دعویٰ کر رہے ہیں کہ پوتن کی فوج یوکرین کی جنگ میں مسلسل نقصان اٹھا رہی ہے۔ خاص طور پر یوکرین تک پہنچنے والے امریکی میزائل بڑی تباہی پھیلا رہے ہیں۔ جس کے غصے میں روس براہ راست ایٹم بم گرا سکتا ہے۔ لیکن کریملن نے واضح کیا ہے کہ یہ اس کی پالیسیوں میں نہیں ہے۔ وہ ایٹمی طاقت استعمال کر سکتا ہے۔ لیکن یوکرین کے ساتھ جنگ ​​اس کی وجہ نہیں بن سکی۔

      جنگ میں یوکرین کو کتنا نقصان ہوا
      یوکرین کی جنگ کا آج 35 واں دن ہے اور یوکرین اس جنگ میں روسی فوج کو ہونے والے نقصانات کی تفصیلات مسلسل جاری کر رہا ہے۔ لیکن یوکرین کو کتنا نقصان پہنچا روس نے بھی اس کی تفصیلات جاری کر دی ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں:
      حکومت گرانے کی سازش سے لے کر خود کو ملی دھمکی تک، Islamabadریلی میں اپوزیشن پر برسے عمران

      روس نے دعویٰ کیا ہے کہ اس کی فوج نے اب تک 123 طیارے اور 74 لڑاکا ہیلی کاپٹر مار گرائے ہیں جو تباہ ہو چکے ہیں. اس کے علاوہ 309 بغیر پائلٹ کے طیاروں کو بھی مار گرایا گیا ہے۔ جو یوکرین کے لیے بہت بڑا نقصان ہے۔ اس کے علاوہ یوکرین کی 172 ملٹی پل لانچ راکٹ سسٹم، 1568 خصوصی فوجی آٹوموٹیو آلات، 721 فیلڈ آرٹلری اور مارٹر تباہ ہوئے ہیں۔ روس کا دعویٰ ہے کہ یوکرین کے 1721 ٹینک اور دیگر بکتر بند گاڑیوں کو بھی تباہ کر دیا گیا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: