سیریزسے قبل پریکٹس میچ نہ کھیلنےکا ہوا نقصان: سیریزگنوانے کے بعد پاکستان کے کپتان سرفرازاحمد کا ترک

کیپ ٹاؤن ٹیسٹ میں شکست کے بعد سرفرازاحمد نےکہا کہ ہمیں صرف ایک پریکٹس میچ کھیلنے کوملا، جس کی وجہ سے ہمار ے بلے بازوں نے اس ٹیسٹ میں بعد میں گرچہ بہادری دکھائی اورامید ہے کہ جوہانسبرگ ٹیسٹ میں ہمیں اس کا فائدہ ہوگا۔

Jan 06, 2019 08:32 PM IST | Updated on: Jan 06, 2019 08:32 PM IST
سیریزسے قبل پریکٹس میچ نہ کھیلنےکا ہوا نقصان:  سیریزگنوانے کے بعد پاکستان کے کپتان سرفرازاحمد کا ترک

پاکستان کے کپتان سرفراز احمد: فائل فوٹو

کیپ ٹاؤن: پاکستانی ٹیم کے کپتان سرفرازاحمد نے کیپ ٹاؤن ٹیسٹ میں جنوبی افریقہ کے ہاتھوں 9 وکٹوں سے شکست کے لئے بلے بازوں کوذمہ دارقراردیتے ہوئےکہا کہ ہم نے پہلی اننگ میں زیادہ رن نہیں بنائےاوراس کےعلاوہ ہماری ٹیم میں جنوبی افریقہ کے خلاف ٹیسٹ سیریزسے قبل 2 یا 3 پریکٹس میچ کھیلے ہوتے تو نتائج مختلف ہوسکتے تھے۔

کیپ ٹاؤن ٹیسٹ میں شکست کے بعد سرفرازاحمد نے کہا کہ ہم نے پہلی اننگ میں زیادہ رن  نہیں بنائے، اگر250 سے300 رن تک بنا لیتےتوشاید آخری اننگ میں ہمیں فائدہ ہوسکتا تھا کیونکہ چوتھی اننگ میں بھی یہ پچ گیندبازوں کو مدد دے رہی تھی۔ اگرآپ ایک ہی سیشن میں پانچ وکٹیں گنوا دیں توپھرآپ کا میچ میں واپس آنا انتہائی مشکل ہوجاتا ہے، لیکن ہمارے بلے بازوں نے جس طریقے سے تیسرے دن کے دوسرے سیشن میں بیٹنگ کی، اسی طرح آپ ٹیسٹ کرکٹ میں سیکھتے ہیں۔

سرفرازاحمد نےمزید کہا کہ میرے خیال میں ہمیں ٹیسٹ سے سیریزسے پہلے دوسے تین پریکٹس میچ کھیلنے چاہئے تھے، جوہمارے لئے ایک مثالی صورتحال ہوتی۔ تاہم ہمیں صرف ایک پریکٹس میچ کھیلنے کوملا ۔ہمار ے بلے بازوں نے اس ٹیسٹ میں بعد میں گرچہ بہادری دکھائی اورامید ہے کہ جوہانسبرگ ٹیسٹ میں ہمیں اس کا فائدہ ہوگا۔ یاد رہے کہ جنوبی افریقہ نے پاکستان کو دوسرے ٹیسٹ میں 9 وکٹوں سے شکست دےکر3 میچوں کی سیریز0-2 سے اپنے نام کرلی۔

Loading...

Loading...