ہوم » نیوز » عالمی منظر

Satan Vs Nike:انسانی خون کے قطرہ کےساتھ بنائے گئے'شیطانی جوتے 'پرنائیکے نےدرج کیاٹریڈمارک کی خلاف ورزی کامقدمہ

ابھی اس ویڈیو کا تنازعہ ختم نہیں ہوا کہ ریپر لٹل ناس نے ایک اور تنازعہ کی شروعات کر دی ۔ انہوں نے بروکلین کی ایک جوتا ساز کمپنی کے ساتھ 666 ایسے ' ستان شوز ' بنانے کا معاہدہ کیا دعویٰ ہے کہ ان جوتوں کے تلووں میں لگی سرخ سیاہی میں انسانی خون کا ایک قطرہ شامل ہوگا ۔

  • Share this:
Satan Vs Nike:انسانی خون کے قطرہ کےساتھ بنائے گئے'شیطانی جوتے 'پرنائیکے نےدرج کیاٹریڈمارک کی خلاف ورزی کامقدمہ
انسانی خون کے قطرہ کے ساتھ بنائے گئے ' شیطانی جوتے ' پر نائیکے نے کیا ٹریڈ مارک خلاف کی ورزی کا مقدمہ دائر

حال ہی میں ریلیز ہوئ میوزک ویڈیو 'اولڈ ٹاؤن روڈ ' میں ریپر لٹل ناس ایکس کا شیطان کے ساتھ لیپ ڈانستنازعہ کا باعث بن چکا ہے ۔ اس پر امریکہ کے ایک گورنر نے سوشل میڈیا پر اپنا رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے اکیس سالہ آرٹسٹ کو بائبل کی آیتیں ٹویٹ کیں ۔


ابھی اس ویڈیو کا تنازعہ ختم نہیں ہوا کہ ریپر لٹل ناس نے ایک اور تنازعہ کی شروعات کر دی ۔ انہوں نے بروکلین کی ایک جوتا ساز کمپنی کے ساتھ 666 ایسے ' ستان شوز ' بنانے کا معاہدہ کیا دعویٰ ہے کہ ان جوتوں کے تلووں میں لگی سرخ سیاہی میں  انسانی خون کا ایک قطرہ شامل ہوگا ۔ جوتوں کی اسطرح ساخت کے لیے بائبل کی آیت ' سٹان فال ' کا حوالہ دیا گیا ہے ۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ ان جوتوں پر نائیکے ایئر میکس 97s تحریر ہوگا۔



جس سے یہ تاثر ملتا ہے کہ یہ معروف اسپورٹس جوتا ساز کمپنی نائیکے کا پروڈکٹ ہے ۔ لیکن نائیکے نے ان جوتوں سے اپنی لا تعلقی کا اظہارکرتے ہوئے کہا ستان شوز بنانے والی کمپنیMSCHFایم ایس سی ایچ ایف پروڈکٹ اسٹوڈیو کے خلاف ٹریڈ مارک چوری اور صارفین کو گمراہ  کرنے کا مقدمہ دائر کردیا ۔ ستان شوز کے ساتھ نائیکے  کا نام شامل ہونے پر اس سے ناراض لوگوں نے نائیکے کے بائیکاٹ کی تحریک شروع کی تھی ۔


ستان شوز کی  666 جوڑیوں کی مارکیٹ میں آمد کے ساتھ ہی فروخت ہو گئیں ۔ حالانکہ اس کی قیمت فی جوڈی ایک ہزار اٹھارہ ڈالر رکھی گئی تھی ۔ایک اور قابل ذکر بات یہ ہے کہ ستان شوز بنانے والی کمپنی MSCHF پروڈکٹ اسٹوڈیو نے اس سے پہلے کے' جیسز شوز ' وائٹ نائیکے ایئر میکس 97 کے نام سے بھی ایک پروڈکٹ لانچ کیا تھا جسکے ساتھ یہ دعویٰ کیا گیا تھا کہ اس کے تلووں میں ہولی واٹر شامل ہے ۔ لیکن اس وقت نائیکے نے اس کمپنی کے خلاف کسی قسم کے رد عمل کا اظہار نہیں کیا تھا
Published by: Mirzaghani Baig
First published: Mar 31, 2021 01:36 PM IST