உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سعودی عرب کا ایران پر پابندی لگانے کا اقوام متحدہ سے مطالبہ

    اقوام متحدہ: فائل فوٹو

    اقوام متحدہ: فائل فوٹو

    نیویارک۔ ایران پر یمن میں حوثی باغیوں کو ہتھیار فراہم کرنے کا الزام لگاتے ہوئے سعودی عرب نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل سے مطالبہ کیا کہ ایران پر پابندیاں عائد کی جائیں۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      نیویارک۔ ایران پر یمن میں حوثی باغیوں کو ہتھیار فراہم کرنے کا الزام لگاتے ہوئے سعودی عرب نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل سے مطالبہ کیا کہ ایران پر پابندیاں عائد کی جائیں۔
      اقوام متحدہ میں سعودی سفیر عبداللہ المعلمی نے سلامتی کونسل کو ایک خط میں لکھا ہے کہ حوثی باغیوں کو ہتھیاروں کی اسمگلنگ سلامتی کونسل کی قراردادوں کی خلاف ورزی اور سعودی عرب، یمن ، خطے اور عالمی امن کے لیے براہ راست خطرہ ہے۔ سعودی عرب نے حوثی باغیوں کو ہتھیاروں کی فراہمی کو ایران پر ہتھیاروں کی فروخت پرعائد پابندی کی خلاف ورزی قرار دیا ہے۔


      واضح رہے کہ سعودی عرب کی قیادت میں 9 رکنی عرب اتحاد جسے امریکی حمایت بھی حاصل ہے، عالمی طور پر تسلیم شدہ یمنی حکومت کی حمایت کرتا ہے اور اس نے مارچ 2015 میں ایران کے حمایت یافتہ حوثی باغیوں کے خلاف فضائی کارروائی کا آغاز کیا تھا۔
      عرب اتحاد نے فضائی کارروائیوں کے ذریعے حوثی باغیوں کو جنوبی یمن سے دور ہونے پر مجبور کردیا۔ تاہم باغیوں کا اب بھی دارالحکومت صنعاء پر قبضہ برقرار ہے جو انہوں نے 2014 میں حاصل کیا تھا۔


      اقوام متحدہ کے اعداد و شمار کے مطابق مارچ 2015 سے اب تک 6 ہزار 600 کے قریب افراد ہلاک ہوچکے ہیں جن میں زیادہ تعداد عام شہریوں کی ہے جبکہ 80 فیصد آبادی کو امداد کی فوری ضرورت ہے۔

      First published: