உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ختم ہو جائے گا صدر بشار الاسد کا اقتدار:سعودی وزیر خارجہ

    فائل فوٹو

    برلن۔ سعودی عرب کے وزیر خارجہ عادل الجبیر نے کہا ہے کہ شام کے صدر بشار الاسد اقتدار میں نہیں بنے رہیں گے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:

      برلن۔ سعودی عرب کے وزیر خارجہ عادل الجبیر نے کہا ہے کہ شام کے صدر بشار الاسد اقتدار میں نہیں بنے رہیں گے۔ ایک جرمن اخبار کو دئے گئے انٹرویو میں مسٹر الجبیر نے کہا کہ شام میں روس کے حملے اور دخل اندازی کے بعد بھی مسٹر اسد کو اقتدار میں نہیں بنے رہنا چاہئے۔ انہوں نے کہا ’’مسٹر اسد کو اقتدار سے بے دخل ہونے میں تین ماہ یا چھ ماہ یا پھر تین سال بھی لگ سکتے ہیں لیکن انہیں شام کی ذمہ داری سے آزاد ہونا ہوگا۔‘‘ یہ انٹرویو آج شائع ہوا ہے۔ شام میں روسی دخل اندازی پر تنقید کرتے ہوئے وزیر خارجہ نے کہا کہ مسٹراسد کی حمایت میں روس کے فضائی حملوں اور ظلم و ستم کے بعد شام کے لوگ اسد کو اقتدار سے بے دخل کرنا چاہتے ہیں۔


      سعودی عرب کے وزیر خارجہ عادل الجبیر نے کہا کہ مسٹر اسد نے پہلے اپنی فوج کے دم پر شام پر حکومت کرنے کی کوشش کی پھر ایران، حزب اللہ اور عراق اور پاکستان کے شیعہ ملیشیا سے مدد مانگی لیکن ہر بار وہ ناکام ہوئے۔ اب روس ان کی مدد کر رہا ہے لیکن پھر بھی وہ اقتدار میں بنے نہیں رہ سکتے۔ واضح رہے کہ مسٹر اسد کی حمایت میں روس نے شام میں گزشتہ سال 30 ستمبر کو اپنی مہم شروع کی تھی۔ روس کے مطابق اس کی یہ مہم دہشت گرد تنظیم دولت اسلامیہ (داعش)اورنصرہ فرنٹ کے خلاف ہے لیکن دوسرے ممالک اور مخالف گروہ نے روس پر مسٹر اسد کے مخالفین کو نشانہ بنانے کا الزام لگایا ہے۔


      شام میں زمینی فوج کے استعمال پر پوچھے گئے سوال پر مسٹر الجبیر نے کہا کہ داعش کے خلاف امریکی قیادت میں چل رہے اتحادی ممالک کی مہم میں اس پر تبادلہ خیال کیا گیا ہے۔ انهوں نے کہا ’’اگر اتحاد شام میں داعش کے خلاف جنگ میں خصوصی افواج کو تعینات کرنے کا فیصلہ کرتا ہے تو سعودی عرب اس میں شامل ہونے کے لئے تیار رہے گا۔

      First published: