ہوم » نیوز » عالمی منظر

اردوغان کے بیان پر بھڑکا سعودی عرب، ترکی کی ہر چیز کے بائیکاٹ کا اعلان

حال ہی میں ترکی کی جنرل اسمبلی میں صدر اردوغان نے کہا تھا کہ خلیج کے کچھ ممالک ترکی کو نشانہ بنا رہے ہیں اور ان پالیسیوں پر عمل کر رہے ہیں جس سے عدم استحکام آ سکتا ہے۔ اس کے بعد انہوں نے طعنہ مارنے کے انداز میں کہا ' یہ نہیں بھولنا چاہئے کہ جو ملک آج سوالوں کی زد میں ہیں ان کا کل تک وجود ہی نہیں تھا اور شاید وہ کل موجود نہ ہوں۔

  • Share this:
اردوغان کے بیان پر بھڑکا سعودی عرب، ترکی کی ہر چیز کے بائیکاٹ کا اعلان
ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان کی فائل فوٹو

ریاض۔ ترکی (Turkey) کے صدر رجب طیب اردوغان (Recep Tayyip Erdogan) کے ایک بیان پر سعودی عرب (Saudi Arabia) بھڑک گیا ہے اور ترکی کے مکمل بائیکاٹ کا اعلان کر دیا ہے۔ حال ہی میں ترکی کی جنرل اسمبلی میں صدر اردوغان نے کہا تھا کہ خلیج کے کچھ ممالک ترکی کو نشانہ بنا رہے ہیں اور ان پالیسیوں پر عمل کر رہے ہیں جس سے عدم استحکام آ سکتا ہے۔


اس کے بعد انہوں نے طعنہ مارنے کے انداز میں کہا ' یہ نہیں بھولنا چاہئے کہ جو ملک آج سوالوں کی زد میں ہیں ان کا کل تک وجود ہی نہیں تھا اور شاید وہ کل موجود نہ ہوں۔ حالانکہ، اللہ کی رضامندی سے ہم اس خطے میں ہمیشہ اپنا پرچم لہراتے رہیں گے'۔ اردوغان کے اس بیان کو براہ راست طور پر سعودی عرب سے جوڑ کر دیکھا گیا جو سال 1932 میں وجود میں آیا تھا۔ اب دونوں ملکوں کی طرف سے آ رہے بیان ان کے سفارتی رشتوں کو نئی سمت میں لے جا سکتے ہیں۔ ترکی کے صدر کے اس بیان کے بعد سعودی عرب کے چیمبرس آف کامرس کے سربراہ نے ترکی کا ہر طرح سے بائیکاٹ کرنے کی اپیل کی ہے۔



اردوغان کے بیان سے بھڑکے سعودی عرب نے اپنے شہریوں سے ترکی کی ہر ایک چیز کا بائیکاٹ کرنے کی اپیل کی ہے۔ اردوغان نے الزام لگایا تھا کہ خلیج کے کچھ ممالک ترکی کو غیر مستحکم کرنے کی سازش رچ رہے ہیں۔ انہوں نے حال ہی میں اقوام متحدہ کے پلیٹ فارم سے بھی سعودی اور اس کے پڑوسی ملکوں پر نشانہ سادھا تھا۔ نیوز ایجنسی رائٹرز کے مطابق، دوسری سہ ماہی میں کل درآمدات کے معاملہ میں ترکی سعودی عرب کا 12 واں کاروباری شراکت دار ہے۔ تازہ اعداد وشمار بتاتے ہیں کہ ترکی سے سعودی عرب میں درآمدات جون میں 18 کروڑ ڈالر کا تھا جو جولائی میں 18.5 کروڑ ڈالر کا ہو گیا۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Oct 08, 2020 01:44 PM IST