ہوم » نیوز » عالمی منظر

سعودی عرب میں 37 لوگوں کا سر قلم، دہشت گردی کے معاملے میں دی گئی سزا

یہ تمام سعودی عرب کے ہی شہری تھے۔ سعودی عرب کے وزارت داخلہ کےمطابق یہ سزا ریاض، مکہ اور مدینہ، قاسم صوبہ اور مشرقی صوبے میں دی گئی۔

  • Share this:
سعودی عرب میں 37 لوگوں کا سر قلم، دہشت گردی کے معاملے میں دی گئی سزا
فائل تصویر

سعودی عرب میں دہشت  گردی پھیلانے کا الزام لگنے کے بعد 37 لوگوں کا سر قلم کرکے موت کے گھاٹ اتار دیا گیا۔ بتایاجارہا ہے کہ یہ تمام سعودی عرب کے ہی شہری تھے۔ سعودی عرب کے وزارت داخلہ کےمطابق یہ سزا ریاض، مکہ اور مدینہ، قاسم صوبہ اور مشرقی صوبے میں دی گئی۔ اس سے متعلق سرکاری سعودی پریس اجینسی نے ایک بیان بھی جاری کیا ہے۔


اس سے کچھ ہی دن پہلے پنجاب کے دو لوگو کو بھی سر قلم کرکے موت کی سزا دی گئی تھی۔ ان کی پہچان ہوشیارپور کے ستویندر اور لدھیاناکے ہرجیت سنگھ کے طور پر ہوئی تھی۔ ان دونوں کا ہی 28 فروری کو سر قلم کر دیا گیا تھا۔


غور طلب ہے کہ سعودی عرب میں مظاہرہ کرنا یا پھر سیاسی پارٹیوں کی تشکیل پر پوری طرح سے پاپبندی ہے۔ حالانکہ محمد بن سلمان نے ولی وہد بننے کے بعد کچھ سماجی تبدیلیاں ضرور کی تھیں۔ اس کے باوجود گزشتہ کچھ سالوں میں کئی مظاہرین، مصنف اور سماجی کارکنان کو سزا مل چکی ہے۔ وہیں یہاں پر شیٹی کارکنوں کو بھی موت کی سزا دی گئی تھی۔  ان پر سیاسی الزام لگائے گئے تھے۔

First published: Apr 23, 2019 10:01 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading