ہوم » نیوز » عالمی منظر

سعودی عرب میں رقاصہ پر حملہ کرنے والے کو پھانسی دے دی گئی

عماد نے 11 نومبر 2019 کو سعودی راجدھانی ریاض میں اسٹیج پر آکر ایک خاتون اور دو مرد فنکاروں پر چاقو سے حملہ کر کے انہیں زخمی کر دیا تھا۔

  • UNI
  • Last Updated: Apr 18, 2020 07:58 AM IST
  • Share this:
سعودی عرب میں رقاصہ پر حملہ کرنے والے کو پھانسی دے دی گئی
سعودی عرب میں اب ایک طرف جہاں تمام سینما گھر کھول دئیے گئے ہیں، وہیں خواتین کو بھی اداکاری، گلوکاری و فیشن انڈسٹری میں قسمت آزمانے کی اجازت دے دی گئی ہے۔

دبئی۔ سعودی عرب میں اسٹیج پر چڑھ کر تین مرد و خاتون ڈانسروں پر خونریز حملہ کرنیوالے شخص کو پھانسی دے دی گئی۔ خونریز حملے کا واقعہ پچھلے سال نومبر میں ریاض میں پیش آیا تھا۔ حملہ آور یمنی تھا۔ بی بی سی کے مطابق سزائے موت سے گزرنے والا 33 سالہ شخص ممنوعہ القاعدہ کا رکن تھا۔ اس کا نام عماد المنصوری بتایا گیا ہے۔


عماد نے 11 نومبر 2019 کو سعودی راجدھانی ریاض میں اسٹیج پر آکر ایک خاتون اور دو مرد فنکاروں پر چاقو سے حملہ کر کے انہیں زخمی کر دیا تھا۔ عماد کی گرفتار ی کے بعد اس پر اقدام قتل اور دہشت گردی کی دفعات کے تحت مقدمہ چلایا گیا تھا۔ اس کے ساتھ ہی گرفتار ایک دوسرے شخص کو ساڑھے 12 سال جیل کی سزا سنائی گئی ہے۔


ریاض میں منعقدہ ایم ڈی ایل بیسٹ فیسٹول: فائل فوٹو


خیال رہے کہ سعودی عرب میں اب ایک طرف جہاں تمام سینما گھر کھول دئیے گئے ہیں، وہیں خواتین کو بھی اداکاری، گلوکاری و فیشن انڈسٹری میں قسمت آزمانے کی اجازت دے دی گئی ہے۔ سعودی خواتین اب غیر محرم مردوں کے ساتھ نہ صرف عام مقامات پر نوکریاں کرتی ہیں بلکہ وہ شوبز کی دنیا میں بھی مردوں کے ساتھ مصروف عمل ہیں۔ سعودی عرب میں اب میوزک فیسٹیول کے ساتھ ساتھ خواتین کے فیشن شوز اور تفریحی میلوں کا انعقاد بھی عمل
میں آ رہا ہے۔
First published: Apr 18, 2020 07:57 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading