உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

     ! سعودی عرب کے اس منصوبے سے صرف ایک  جزیرے تک سمٹ جائے گا قطر

    فائل فوٹو : اے پی ایف

    فائل فوٹو : اے پی ایف

    گزشتہ 18 ماہ سے سعودی عرب قطر کے درمیان کشیدگی کے حالات بنے ہئے ہیں۔ جس میں یہ منصوبہ تنازعہ کا نیا سبب بنے گا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      خلیج ممالک کے درمیان ڈپلومیٹک  تنازع کے درمیا ن سعودی عرب کے ایک افسر نے اشارہ دیا ہے کہ ایسی نہر کی کھدائی کا منصوبے کے ساتھ آے بڑھ رہا ہو جو پروسی ملک قطر کو جزیرے میں تبدیل کر دے گا۔ شہزادے محمد بن سلمان کے سینئر صلاح کار سعود القحطانی نے جمعہ کو کہا ، " میں سلویٰ جزیرہ منصوبہ بندی کے نافذ ہونے کی تفصیلی معلومات کا بے صبری سے انتظار کر رہا ہوں۔ جو اس صوبے کی جغرافی حالت کو بدل دے گا"۔

      اس منصوبے کے نافذ ہونے کے بعد سعودی عررب سے جزریرہ نما الگ تھلگ ہو جائے گا۔ گزشتہ 18 ماہ سے سعودی عرب قطر کے درمیان کشیدگی کے حالات بنے ہئے ہیں۔ جس میں یہ منصوبہ تنازعہ کا نیا سبب بنے گا۔

      سعودی عرب ، اقوام متحدہ امارات اور مصر نے قطر پر دہشت گردی کو حمایت دینے اور ایران کے بیحڈ قریب  ہونے کا الزام لگاتے ہوئے جون 2017 میں اس کے ساتھ سفارتی اور کاروباری تعلقات ختم کر لئے تھے۔ اس الزام سے قطر انکار کرتا رہا ہے۔

      اس سال اپریل میں حکومت کی حمیاتی سبق سماچار ویب سائٹ کی رپورٹ آئی تھی جس میں بتایا گیا تھا کہ حکومت 60 کلو میٹر لمبی اور 200 میٹر چوڑی نہر بنانے کا منصوبہ بنا رہی ہے جو قطر کے ستاھ ملک کی حد تک ہوگی۔ اس منصوبے پر سعودی عرب کے افسران نے تبصرہ  نہیں کیا ہے اور نہ ہی قطر کی جانب سے کوئی رد عمل آیا ہے۔
      First published: